پاکستان جا کر کرکٹ کھیلنے میں کوئی اعتراض نہیں: بنگلا دیشی ہیڈ کوچ

لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ ٹیم نے اپنی آئندہ سیریز بنگلا دیش کے خلاف رواں ماہ اپنی ہوم گراؤنڈ پر کھیلنی ہے جس کے بعد مہمان بورڈ نت نئے بہانے کر کے اپنی ٹیم بھیجنے سے گریزاں ہے، ٹیم نہ بھیجنے کی وجہ پاکستانی میدانوں پر ٹیسٹ میچز نہ کھیلنا ہے، مہمان بورڈ کے چیئر مین کا کہنا تھا کہ غیر ملکی کوچز پاکستان جانے سے گریزاں ہیں تاہم بنگلا دیش کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ نے بنگال بورڈ کے خلاف جا کر بیان دے کر سب کو حیرت میں ڈال دیا اور پاکستان جانے کی حامی بھر لی۔

غیر ملکی خبر رساں دارے کے مطابق بنگلا دیش کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ رسل ڈومنگو نے اعتراف کیا ہے کہ ٹیم کے کچھ کھلاڑی پاکستان جانا نہیں چاہتے اسلئے کرکٹ بورڈ ٹیم بھیجنے سے ہچکچا رہا ہے مجھے پاکستان جانے میں کوئی اعتراض نہیں ہے۔

یاد رہے کہ بنگلا دیش کرکٹ بورڈ کے صدر نظم الحسن صدر کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو پہلے ہی آگاہ کر دیا ہے کہ اگر ہماری ٹیم کے کھلاڑی تیار ہوئے تو اپنی ٹی ٹونٹی ٹیم پاکستان بھیجنے کے لیے تیار ہیں۔ اگر ٹیم تیار ہوئی تو ٹیم مینجمنٹ کے ساتھ سینئر کھلاڑی پاکستان بھیج دیں گے تاہم ہماری ٹیم کے چند سینئرز پلیئرز پاکستان جانے سے گریزاں ہیں۔

نظم الحسن کا کہنا تھا کہ ہم اپنی حکومت کی کلیئرنس کا انتظار کر رہے ہیں، ہمیں اپنی سکیورٹی ایجنسیوں سے کلیئرنس بھی درکار ہے، یہاں میں ایک چیز واضح کر دوں کہ بورڈ کسی بھی کھلاڑی پر ٹور کے لیے دباؤ نہیں ڈال سکتا۔

ڈھاکا میں بی پی ایل کا دوسرا مرحلہ شروع ہونے سے قبل بی سی بی کے صدر کا کہنا تھا کہ غیر ملکی کوچنگ سٹاف بھی ٹیسٹ میچز کیلیے پاکستان جانے کو تیار نہیں،7 دن کے دورہ میں 3ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلنے کیلیے جاسکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ابھی واضح نہیں کی مختصر فارمیٹ کے میچز کیلیے ٹیم پاکستان جاتی ہے تو کوچنگ سٹاف یا کھلاڑیوں میں سے ساتھ جانے یا نہ جانے کا فیصلہ کون کرتا ہے۔

بنگلا دیشی ہیڈ کوچ رسل ڈومنگو کا کہنا تھا کہ ٹیم کے پاکستان جانے یا نہ جانےکا فیصلہ بورڈ نے کرناہے اور انہیں اس سے کوئی مسئلہ نہیں ہے۔اگر ٹیم کو کلیئرنس مل جاتی ہے تو وہ ضرور جائیں گے۔

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئر مین احسان مانی کہہ چکے ہیں کہ اگر بنگلا دیش کی ٹیم پاکستان کھیلنے نہ آئی تو آئی سی سی میں قانونی چارہ جوئی کریں گے اپنے ملک میں کھیلی جانے والی سیریز کسی اور ملک میں نہیں کھیلیں گے۔

رسل ڈومنگو کا کہنا تھا کہ سمجھتا ہوں کہ مسئلے کو بات چیت سے ہی حل کیا جا سکتا ہے۔ ہمیں اس معاملے پربورڈ سے بات کرنی چاہئے پھر دیکھنا ہوگا کہ بورڈ کیا فیصلہ کرتا ہے۔

واضح رہے کہ بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم نے شیڈول کے مطابق ٹی ٹونٹی اور ٹیسٹ سیریزکیلئے پاکستان کا دورہ کرناہے لیکن یہ دورہ اسوقت غیر یقینی صورت حال سے دوچارہے۔بنگلہ دیش ٹیسٹ میچز نہ کھیلنے جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈپاکستان میں ہی پہلے ٹیسٹ سیریزکھیلنے کے فیصلے پر قائم ہے۔

اطلاعات کے مطابق بنگلا دیش کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان سکیورٹی نہیں سیاست کی وجہ سے غیر یقینی صورتحال سے دوچارہے، بنگلا دیش میں کچھ حلقے پاکستان کے دورے کے حق میں نہیں ہیں اور ان حلقوں کو بھارت کی جانب سے ہدایات مل رہی ہیں بھارت کسی بھی صورت پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی نہیں چاہتا اسلئے کبھی بورڈ حکام اور کبھی کھلاڑیوں کو دھمکیاں دی جاتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں