پی ایس ایل ملک میں ہونے سے معیشت اور سیاحت کو فروغ ملے گا: احسان مانی

لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئر مین احسان مانی کا کہنا ہے کہ ملک میں ٹیسٹ کرکٹ کی میزبانی کے بعد پی ایس ایل کے تمام میچز کا پاکستان میں انعقاد کرکٹ بورڈ کی بڑی کامیابی ہے۔

پاکستان سپر لیگ کے شیڈول کے بعد چیئر مین پی سی بی کا کہنا تھا کہ یہ لیگ کی پاکستان ہے، اس کے تمام میچز ہوم گراؤنڈ پر ہوں گے، گزشتہ ایڈیشن کے اختتام پر پاکستانی عوام سے وعدہ کیا تھا کہ پی ایس ایل 2020ء کے تمام میچز پاکستان میں ہوں گے اور آج وہ وعدہ وفا ہو رہا ہے۔

احسان مانی کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل 2020ء میں 36 غیر ملکی کھلاڑی شرکت کر رہے ہیں۔ لیگ کے پانچویں ایڈیشن کے لیے 425 غیر ملکی کھلاڑیوں نے رجسٹریشن کروائی تھی۔

اس فہرست میں بنگلا دیش کے 23، افغانستان کے 39، انگلینڈ کے 109، آسٹریلیا کے 12، جنوبی افریقا کے 27، سری لنکا کے 39، نیوزی لینڈ کے 11، ویسٹ انڈیز کے 82، زمبابوے کے 9، امریکا کے 6، یو اے ای کے 9، سنگا پور کے 4، سکاٹ لینڈ کے5، اومان کے 9، ہالینڈ کے 7، نیپال کے 8، آئر لینڈ کے 6، کینیڈا کے 10، ہانگ کانگ کے 7 جبکہ برمودا، کینیا اور نیمیبیا کا ایک ایک ایک کھلاڑی شامل ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ غیر ملکی کھلاڑیوں کی اس تعداد میں رجسٹریشن کروانے سے دنیا بھر میں یہ مثبت پیغام گیا ہے کہ پاکستان ایک پر امن اور محفوظ ملک ہے، اس ایونٹ کے انعقاد سے معیشت اور سیاحت کو فروغ ملے گا جو ملک کی مجموعی ترقی میں معاون ثابت ہو گا۔

ان کا کہنا تھا کہ لیگ کے پانچویں ایڈیشنل کا انعقاد ملک میں موجود کرکٹ کے مداحوں کو ایک طویل انتظار کے بعد اپنے پسندیدہ کرکٹرز کو ایکشن میں دیکھنے کا موقع فراہم کرے گا، پر امید ہیں کہ گزشتہ سال کی طرح رواں سال بھی ہر پاکستانی اس ایونٹ کے انعاد کو کامیاب بنانے میں اپنا کردار ادا کریں گے اور اس دوران شائقین کرکٹ کی ایک بڑی تعداد سٹیڈیمز کا رخ کرے گی۔

چیئر مین پی سی بی کا کہنا تھا کہ شیڈول کے اعلان کے ساتھ ہی پی سی بی بھی کھلاڑیوں، کمرشل پارٹنرز، میڈیا اور مداحوں سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز کو بہترین سہولیات فراہم کرنے کے لیے پر عزم ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ مقامی انتظامیہ اور سکیورٹی ایجنسیز کے تعاون کے مشکور ہیں جنہوں نے ایچ بی ایل پاکستان سپر لیگ کو مکمل طور پر پاکستان لانے میں پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی بھرپور مدد کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں