جسم کی چربی پگھلانے والے 6 کھانے

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) موٹاپا کم کرنا اور جسم کی چربی پگھلانا جان جوکھوں کا کام ہے۔ اکثر اوقات کڑی ورزش اور سخت ڈائٹنگ بھی بے سود جاتی ہیں تاہم اب ماہرین نے کچھ ایسی کھانے کی چیزیں بتا دی ہیں جن کے استعمال سے آپ بغیر ورزش کے جسم کی چربی پگھلا کر موٹاپے سے نجات پا سکتے ہیں۔ ڈیلی سٹار کے مطابق ان اشیاءمیں انڈے، کم چکنائی والا دہی، ادرک، بادام اور دیگر خشک میوہ جاتا، پپیتا اور سرخ مرچ شامل ہیں۔ ماہر غذائیات الیگزینڈر ملر نے بتایا ہے کہ ”انڈے پروٹین سے بھرپور ہوتے ہیں اور یہ وزن کم کرنے میں بھی مدد دے سکتے ہیں کیونکہ انڈے کھانے سے انسان کو تادیر بھوک نہیں لگتی جس کے نتیجے میں وہ کم کھانا کھاتا ہے۔ ایک تحقیق میں ثابت ہوچکا ہے کہ جو لوگ انڈے کھاتے ہیں وہ دوسروں کی نسبت جسم کی چربی کم کرنے کی کوشش میں 16فیصد زیادہ کامیاب رہتے ہیں۔“
امریکہ کے ماہر غذائیات ڈاکٹر میکائیل زیمیل کا کہنا تھا کہ ”دہی موٹاپے سے نجات پانے میں انتہائی معاون ثابت ہوتا ہے۔ ہماری ایک تحقیق میں یہ معلوم ہوا ہے کہ 12ہفتے تک مسلسل روزانہ کم چکنائی والا دہی سے وزن میں ساڑھے 4کلوگرام تک کمی واقع ہو جاتی ہے۔ اس تحقیق میں شامل لوگوں کی کمر بھی ڈیڑھ انچ تک کم ہو گئی تھی۔“ ادرک کے متعلق برطانوی نیشنل لائبریری آف میڈیسن کے ماہرین کی ایک تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ ادرک چربی پگھلانے، انسولین کو مستحکم رکھنے اور نظام انہضام کو بہتر بنانے کے لیے اکسیر کا درجہ رکھتی ہے۔اس کے علاوہ یہ دوران خون اور دل کے امراض سے بھی محفوظ رکھتی ہے۔“ این سی بی آئی کی شائع کردہ ایک تحقیقاتی رپورٹ میں بادام اور دیگر خشک میوہ جات کے متعلق بتایا گیا ہے کہ انہیں کھانے سے موٹاپے میں62فیصد اور کمر کے سائز میں 56فیصد زیادہ تیزی کے ساتھ کمی واقع ہوتی ہے۔ پپیتا وٹامنز سی اور ای کے علاوہ دیگر آکسیڈنٹس سے بھرپور ہوتا ہے۔ 100گرام پپیتے میں صرف43کیلوریز ہوتی ہیں چنانچہ یہ پیٹ کی چربی پگھلانے اور مجموعی طور پر موٹاپا کم کرنے میں بہت معاون ثابت ہوتا ہے۔ سرخ مرچیں میٹابولزم کو 20فیصد زیادہ تیز کرتی ہیں جس کے نتیجے میں ایک طرف جسم میں چربی جمع نہیں ہونے پاتی اور دوسری طرف پہلے سے جمع شدہ چربی کے پگھلنے کی رفتار بھی تیز ہو جاتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں