احتساب عدالت نے نوازشریف کو کس جرم میں سزا سنائی ؟ کرپشن نہیں بلکہ ۔۔۔ فیصلے میں ایسا انکشاف کہ ہر کوئی حیران پریشان رہ گیا

لاہور (ویب ڈیسک )گزشتہ روز احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں نوازشریف کو 11 ، مریم نواز کو 8 اور کیپٹن صفدر کو اعانت جرم میں ایک سال قید اور جرمانوں کی سزا سنا دی ہے تاہم اب عدالت کی جانب سے تحریری فیصلہ بھی سامنے آ گیاہے جس میں انتہائی حیران کن انکشاف ہواہے ،عدالت کے فیصلے میں کہاہے کہ نوازشریف نے آمدن سے زائد اثاثے بنائے اور وہ آمدن سے زائد اثاثے بتانے میں ناکام رہے ، مجرمان کو آمدن سے زائد اثاثے اور بے نامی جائیدادیں بنانے پر سزا سنائی گئی
نجی ٹی وی جیونیوز کے مطابق احتسا ب عدالت نے اپنے تفصیلی فیصلے میں کہاہے کہ نوازشریف کے خلاف کرپشن کا کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملا ہے تاہم اثاثوں سے متعلق شواہد نوازشریف کی جانب اس بات کا اشارہ دیتے ہیں کہ منی ٹرین کی وضاحت نہیں کی جاسکتی ، نیب قانون اس بات کی اجازت دیتاہے کہ کرپشن اخذکر لی جائے ، ملزمان پر بد عنوانی کے ذریعے بے نامی جائیداد بنانے کا الزام ثابت ہو گیاہے ، جبکہ استغاثہ رشوت کے الزام کے ٹھوس ثبوت نہیں دے سکا ہے ، ملزمان 10 روزمیں اپیل کا حق رکھتے ہیں ۔
عدالت کے فیصلے میں کہاہے کہ استغاثہ مقدمہ ثابت کرنے میں کامیاب رہا ، نوازشریف نے آمدن سے زائد اثاثے بنائے اور وہ آمدن سے زائد اثاثے بتانے میں ناکام رہے ، مجرمان کو آمدن سے زائد اثاثے اور بے نامی جائیدادیں بنانے پر سزا سنائی گئی۔ مریم نواز کی جانب سے جمع کروائی گئی ٹرسٹ ڈیڈ کو بھی جعلی قرار دیدیا گیاہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں