”آمرانہ حکمرانی میں امن تھا ،تعلیم مل رہی تھی اور ۔۔۔“قومی اسمبلی میں وزیر خارجہ خواجہ آصف نے ایسی بات کہہ دی کہ نواز شریف کے بھی ہوش اڑ جائیں گے

اسلام آباد (ویب ڈیسک)وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہا ہے کہ میں آمریت کا حامی نہیں ہوں لیکن بیشتر عرب ممالک میں آمرانہ دور اقتدار میں امن تھا ،لوگوں کو تعلیم مل رہی تھی ،ہسپتال مفت علاج کر رہے تھے ،انفرا سٹرکچر بن رہا تھا لیکن اب عراق ،شام اور لبییاجیسے ان ممالک میں بنیادی ڈھانچہ بھی ختم ہو گیا اور معصوم بچے بوڑھے شہید ہو رہے ہیں ۔
قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن کی سب سے زیادہ خواہش پاکستان کو ہے ،کسی سپر پاور کی یہ خواہش نہیں کہ افغانستان میں امن ہو ،آج پاکستان پر الزام لگا یا جا رہا ہے کہ دہشت گرد پاکستان کی سرزمین استعمال کر رہے ہیں حالانکہ دنیا کی بہترین سیکیورٹی فورسز افغانستان میں ہیں لیکن پھر بھی 43فیصد افغانستان پر طالبان کا کنٹرول ہے ،انہیں پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے کی کیا ضرورت ہے ؟،امریکہ کے افغانستان میں ہوتے ہوئے بھی ہیروئن کی کاشت 2ہزار ٹن سے بڑھ کر 9ہزار ٹن تک کیسے پہنچ گئی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان صرف اپنے مفادات کا تحفظ کرے گا ،کسی اور طاقت کے مفادات کا تحفظ نہیں کرے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں