ایک لڑکی سیلفی لیتے ہوئے پاؤں پھسلنے سے دریائے نیلم میں جا گری

اسلام آباد(سٹی نیوز) وادی نیلم معروف ترین سیاحتی مقام ہے جہاں پاکستان بھر سے بڑی تعدادمیں لوگ سیروتفریح کے لیے جاتے ہیں۔ سیاحوں کی بے احتیاطی کے باعث بسااوقات وہاں سے حادثات کی خبریں بھی آتی رہتی ہیں۔ گزشتہ دنوں ایسے ہی ایک فیملی وادی میں گئی ہوئی تھی کہ ایک لڑکی سیلفی لیتے ہوئے پاؤں پھسلنے سے دریائے نیلم میں جا گری۔ اس کے بعد اس پورے خاندان کے ساتھ بھی ایسا دردناک واقعہ پیش آ گیا کہ جان کر ہر آنکھ اشکبار ہو گئی۔
لڑکی کے دریا میں گرنے کے بعد اسے بچانے کے لیے اس کے بھائی طلحہٰ خالد نے بھی چھلانگ لگا دی۔ طلحہ کے پیچھے اس کی بڑی بہن اور والدہ بھی باری باری دریا میں کود گئیں اور پورا خاندان موت کے منہ میں چلا گیا، صرف والدہ کو زندہ نکالا جا سکا جو ہسپتال میں زندگی و موت کی کشمکش میں ہے اور اس کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔ اب تک صرف ایک لڑکی کی لاش دریا سے نکالی جا سکی ہے۔ واضح رہے کہ طلحہٰ کوہاٹ انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں ایم بی بی ایس کا طالب علم تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں