دبئی میں ایک پاکستانی شہری اور 6 نوجوان لڑکیاں۔۔۔ ایسی خبر آگئی کہ ہر پاکستانی شرم سے پانی پانی ہوجائے

دبئی سٹی(مانیٹرنگ ڈیسک) بیرون ملک جانے والے بے شمار پاکستانی شہری اپنی محنت اور دیانتداری کے باعث ملک کے لئے نیک نامی کا باعث بنتے ہیں لیکن چند ایک ایسے بدبخت بھی ہوتے ہیں جو اپنے شیطانی کاموں کے باعث ہموطنوں کے لئے شرمندگی کا سبب بن جاتے ہیں۔ دبئی میں ایک ایسے ہی شیطان صفت پاکستانی نوجوان کو گرفتار کر لیا گیا ہے جو نصف درجن خواتین پر جنسی حملوں کا ارتکاب کر چکا ہے۔
گلف نیوز کے مطابق حال ہی میں ایک نوجوان فرانسیسی لڑکی نے پولیس کو شکایت کی کہ ڈاؤن ٹاؤن دبئی کے علاقے میں رات کے وقت ایک نامعلوم شخص نے اس کی عصمت دری کی کوشش کی لیکن اس کے شور مچانے پر وہ فرار ہو گیا۔ لڑکی نے بتایا کہ رات تقریباً 11 بجے وہ ایک کافی شاپ سے نکلی اور پیدل اپنے گھر کی جانب جا رہی تھی۔ سڑک کے نسبتاً ویران حصے میں ایک جگہ اچانک ایک شخص پیچھے سے نمودار ہوا اور ایک ہاتھ اس کے منہ پر رکھ کر اسے قریبی جھاڑیوں کی جانب کھینچنے لگا۔ لڑکی کا کہنا تھا کہ جب اس نے مزاحمت کی اور شور مچایا تو یہ شخص اس کے جسم کو نوچتا ہوا وہاں سے فرار ہو گیا۔
پاکستانیوں نے ایک دم چیف جسٹس کے ڈیم فنڈ میں کتنی رقم جمع کرادی؟ انتہائی حیران کن خبرآگئی
جب اس واقعے کی شکایت پولیس کے پاس پہنچی تو معلوم ہوا کہ اسی نوعیت کے تقریباً چھ واقعات پہلے بھی پیش آ چکے تھے۔ اس بار اتفاق سے پولیس کو سی سی ٹی وی کیمرے کی ریکارڈنگ بھی دستیاب ہو گئی جس میں فرانسیسی لڑکی کا پیچھا کرتے نوجوان کو دیکھا جا سکتا تھا۔ پولیس نے اس ویڈیو کی مدد سے ملزم کا سراغ لگا لیا، جو کہ 22 سال کا پاکستانی نوجوان ہے۔ مزید یہ معلوم ہوا کہ دیگر چھ خواتین پر جنسی حملوں میں بھی یہی بدبخت ملوث تھا۔ تھانے میں کی گئی شناخت پریڈ میں بھی ملزم کی شناخت ہو گئی جبکہ اس نے خود بھی چھ سے سات خواتین پر جنسی حملوں کا اعتراف کر لیا۔ شیطان صفت ملزم کے خلاف مقدمے کی کاروائی جاری ہے، جس کا فیصلہ 29 جولائی کے روز متوقع ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں