عمران خان ہمارا لاڈلا نہیں، اس حوالے سے کی گئی بیان بازی درست نہیں: چیف جسٹس

اسلام آباد (سٹی نیوز)چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ عمران خان ہمارا لاڈلا نہیں ہے ، اس حوالے سے کی گئی بیان بازی درست نہیں ہے ۔

بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات کے کیس کی سماعت کے دوران وزیر کیڈ طارق فضل چوہدری سپریم کورٹ میں پیش ہوئے۔ چیف جسٹس نے ان سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ بار بار یہ تاثر کیوں دیا جارہا ہے کہ عدالت عمران خان کے ساتھ کوئی خاص سلوک کر رہی ہے؟، عمران خان ہمارا لاڈلا نہیں ہے ، اس حوالے سے کی گئی بیان بازی درست نہیں ہے ۔ کارروائی حکومت نے کرنا ہوتی ہے حکومت خود کارروائی نہ کرے تو ہم کیا کرسکتے ہیں، وضاحت دیں ورنہ آپ کے خلاف کارروائی کروں گا۔ حکومت نے کہا کہ بنی گالہ میں بہت بڑی تعداد میں تعمیرات ہوچکی ہیں، بتائیں تعمیرات ریگولر کرنے کا فیصلہ کس کا تھا؟ جس پر وزیر کیڈ طارق فضل چوہدری نے عدالت کو بتایا کہ بنی گالہ میں تعمیرات ریگولر کرنے کا فیصلہ حکومت کا تھا، عدالت نے بنی گالا تعمیرات ریگولر کرنے کا کوئی حکم نہیں دیا۔

چیف جسٹس نے کہا ہم نے کہاں عمران خان کو لاڈلا بنادیا؟ ہم نے کہاں عمران خان کو رعایت دی؟ مریم اورنگزیب کیوں ایسے بیانات دیتی ہیں، بلائیں مریم اورنگزیب کو ، انہیں ان کا بیان دکھاتے ہیں۔ عمران خان کے وکیل ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ مریم اورنگزیب وفاقی وزیر ہیں وہ ایسے بیانات نہیں دے سکتیں۔

وزیر کیڈ طارق فضل چوہدری نے کہا کہ عمران خان نے اپنے بنی گالہ کے گھر کے حوالے سے جو دستاویزات پیش کیں ان کی تصدیق نہیں ہوسکی، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اگر ایسا ہے تو پھر اس معاملے کی تحقیقات کرالیں اور اس کے بعد ریاست جو چاہے فیصلہ کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں