بھارت میں مذہبی بنیاد پر امتیازی سلوک اور حملے، امریکا کا اظہار تشویش

واشنگٹن: (ویب ڈیسک) امریکا نے بھارت میں مذہبی اور نسلی بنیادوں پر اقلیتوں کے ساتھ امتیازی سلوک اور ان کے خلاف حملوں پر شدید تشویش ظاہر کی ہے۔

امریکی کانگریس کی ایک رپورٹ میں بھی گزشتہ سال اگست میں مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے اور دسمبر میں شہریت کے ترمیمی قانون کی پارلیمنٹ سے منظوری کا گزشتہ سال بھارت میں ہونے والے اہم واقعات کے طور پر حوالہ دیا گیا ہے۔

امریکی کانگریس میں پیش کی گئی سالانہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ قانون کی منظوری کے بعد اترپردیش اور آسام میں احتجاجی مظاہروں اور پرتشدد جھڑپوں میں 25 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہو گئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے بعض اوقات مذہب کی بنیاد پر مشتعل ہجوم کی جانب سے تشدد لوگوں کے سرعام قتل اور فرقہ وارانہ تشدد جیسے عوامل سے انکار یا انہیں نظر انداز کیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں