فٹنس ٹیسٹ میں ناکام ہونے والے عمر اکمل کو سنٹرل کنٹریکٹ کا حصہ نہ بنا کر دیگر کھلاڑیوں کیلئے بھی خطرے کی گھنٹی بجا دی

سٹی نیوز) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے 2017۔18ء کیلئے سنٹرل کنٹریکٹ کا اعلان کر دیا ہغے جس کے تحت 35 کھلاڑیوں کی 4 درجہ بندیاں کی گئیں ہیں جبکہ متعدد مرتبہ فٹنس ٹیسٹ میں ناکام ہونے والے عمر اکمل کو سنٹرل کنٹریکٹ کا حصہ نہ بنا کر دیگر کھلاڑیوں کیلئے بھی خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔
پی سی بی کا کہنا ہے کہ سنٹرل کنٹریکٹس کا اعلان کھلاڑیوں کی کارکردگی، فٹنس اور نظم و ضبط کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا گیا ہے اور یہی وجہ ہے کہ عمر اکمل کو کنٹریکٹ کا حصہ نہیں بنایا گیا۔
یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ عمر اکمل ناصرف پاکستان میں فٹنس ٹیسٹ پاس کرنے میں ناکام ہو گئے تھے بلکہ چیمپینز ٹرافی کے سکواڈ کا حصہ بن کر انگلینڈ گئے تو وہاں بھی 2مرتبہ فٹنس ٹیسٹ پاس کرنے میں ناکام ہوئے جس کی بناپر انہیں وطن واپس بھیج دیا گیا۔
عمر اکمل ان دنوں اپنی فٹنس حاصل کرنے پر توجہ دے رہے ہیں تاہم میڈیا میں یہ خبریں بھی گردش کر رہی ہیں کہ وہ علاج کیلئے برطانیہ گئے ہوئے ہیں تاہم یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے کہ انہیں کیا بیماری لاحق ہے۔
ماہرین کرکٹ کے مطابق عمر اکمل کو سنٹرل کنٹریکٹ کا حصہ نہ بنا کر دیگر کھلاڑیوں کیلئے بھی ایک مثال قائم کی گئی ہے کہ مستقبل میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے صرف وہ کرکٹرز ہی سنٹرل کنٹریکٹ کا حصہ ہوں گے جو اپنی فٹنس بحال رکھتے ہوئے ناصرف اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے بلکہ نظم و ضبط پر پابندی کو بھی یقینی بنائیں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں