امریکی ریاست کیلیفورنیا کے قدیم آتش فشاں کے میلوں چوڑے دہانے میں گزشتہ کئی دنوں سے کم طاقت کے زلزلے پیدا ہو رہے ہیں

نیویارک (ویب ز ڈیسک) امریکی ریاست کیلیفورنیا کے قدیم آتش فشاں کے میلوں چوڑے دہانے میں گزشتہ کئی دنوں سے کم طاقت کے زلزلے پیدا ہو رہے ہیں، جس کے بعد یہ خطرہ سنگین ہو گیا ہے کہ کسی بھی وقت یہ آتش فشاں پھٹ سکتا ہے، جس کے نتیجے میں کرہ ارض سے زندگی کا صفایا ہو سکتا ہے۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ ’لانگ ویلی کرڈرا‘ کے نام سے مشہور آتش فشاں کے پھٹنے پر لاوے کی بہت بڑی مقدار سینکڑوں کلو میٹر پر محیط علاقے کو اپنے لپیٹ میں لے گی جبکہ آتش فشاں کے پھٹنے پر انتہائی خطرناک زلزلہ بھی آسکتا ہے۔ آتش فشان کی راکھ میلوں کی بلندی تک جائے گی اور دنیا کے بڑے حصے کو اپنی لپیٹ میں لے کر لمبے عرصے کے لئے سورج کی روشنی سے محروم کر دے گی۔
امریکی جیو لوجیکل سروے کی جانب سے بھی لانگ ویلی کرڈرا کے خطرے کو انتہائی لیول کا قرار دیا جا چکا ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق اس آتش فشاں کے پھٹنے کی صورت میں لاکھوں نہیں بلکہ کروڑوں افراد براہ راست متاثر ہونگے۔ صرف گزشتہ چند دن کے دوران اس آتش فشاں کے نزدیکی علاقوں میں ڈیڑھ سو سے زائد ہلکے زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں، جو اس بات کا اشارہ ہیں کہ آتش فشاں کے اندر دباؤبے حد بڑھ چکا ہے اور یہ کسی بھی وقت پھٹ سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں