بلدیاتی نمائندوں نے کے پی کے حکومت کو نا اہل قرار دیتے ہوئے پنجاب حکومت سے مدد کی اپیل کی

پشاور(سٹی نیوز) خیبر پختونخوا میں ڈینگی وائرس وبائی شکل اختیار کرتے ہوئے کئی جانیں نگلنے لگا ، سینکڑوں ہسپتالوں میں علاج کے لئے پہنچنے لگے ،بلدیاتی نمائندوں نے صوبائی حکومت کو ڈینگی بخار سے نمٹنے کے لئے کئے جانیوالے اقدامات کو انتہائی نامناسب قرار دیتے ہوئے پنجاب حکومت سے مدد کی اپیل کی ہے۔
کے پی کے میں ڈینگی کے مرض کے پھیلنے حوالے سے موجودہ حالات اور بلدیاتی نمائندوں کی گفتگو بھی منظر عام پر لائی گئی ہے جس کے مطابق ڈینگی بخار سے متاثر6سو سے زائد افراد ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں اور پورے خیبر پختونخوا میں کئی شہروں میں ڈینگی وائرس انتہائی تیز ی سے پھیلنے لگا ہے جس پرشہریوں اور بلدیاتی نمائندوں نے کے پی کے حکومت کو نا اہل قرار دیتے ہوئے پنجاب حکومت سے مدد کی اپیل کی ہے۔ داد خان ناظم شہید آباد کا کہنا ہے کہ 9آدمیوں کی ہلاکت ہوئی ہے ہماری صوبائی حکومت اندھی اور بہری ہو چکی ہے انہیں ڈینگی سے نمٹنے کا کچھ نہیں سوجھ رہا ہے مہربانی کر کے پنجاب حکومت نے جو اقدامات کئے ہیں وہ اقدامات کریں اگر ہماری صوبائی حکومت ایسا نہیں کر سکتی تو ہم استعدا دکرتے ہیں کہ پنجاب حکومت آ کر قیمتی جانوں کو بچانے میں کردار ادا کرے۔ نواب خان جنرل کو نسلر جھکال کا کہنا ہے کہ ہمارے گاؤں میں 9افراد جاں بحق ہو چکے ہیں اور کئی شہری ڈینگی بخار میں مبتلا ہو کر ہسپتالوں میں پہنچ چکے ہیں لیکن حکومت ان معاملا ت کو بہتر انداز میں نہیں چلا رہی اور تبدیلی کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا جار ہا ہے۔نواب خان کا کہنا ہے کہ اتنی بڑی اموات پر نہ تو کسی وزیر نے ہسپتالوں کا دورہ کیا ہے اور وزیر اعلیٰ بھی نہیں آئے ہم چاہتے ہیں حکومت ہمارے شہریوں کی زندگیاں بچائے اگر نہیں بچا سکتی تو پنجاب حکومت سے اپیل کرتے ہیں وہ ہماری مدد کر نے کے لئے میدان میں آ ئے۔ مومن خان کا کہنا تھا کہ ہمیں صوبائی حکومت نے لا وارث چھوڑ دیا ہے اس موقع پر پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن خیبر پختونخوا کے صدر ڈاکٹر حسین احمد ہارون نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا کی حکومت ڈینگی وائرس کے خاتمے ناکام نظرآتی ہے ، اس بیماری سے کئی افراد ہسپتالوں جبکہ کئی گھروں میں اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں لیکن حکومت حقیقی اموات کی شرح کو چھپا رہی ہے۔
ویب سائٹ‘ کی جانب سے جو آرٹیکل شائع کیا گیا اس میں ایک پیغام کو جنید صفدر کے نام سے منسوب کیا گیا ،آرٹیکل میں کہا گیا کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کے نواسے جنید صفدر نے عوام کے نام کھلا خط لکھا ہے جس میں انہوں نے سیاست میں قدم رکھنے کی دلی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ ’’میں کیپٹن (ر)صفدر اور مریم نواز کا بیٹا اور میاں محمد نوازشریف کا نواسہ ہوں ،حمزہ شہباز کا کزن ہوں ،میں حال ہی میں اپنی اعلیٰ تعلیم مکمل کر کے لندن سے پاکستان واپس آیا ہوں ،اور مجھے یقین ہے کہ میں اس کے قابل ہوں کہ میں اپنی زندگی پاکستان میں بہتری لانے کیلئے سیاست کے نام کر دوں ،میں چاہتا ہوں جو سخت محنت میرے نانا نے اپنے ملک کیلئے کی ہے میں اسے سیاست میں آ کر آگے بڑھاؤں۔‘‘
ان کا کہناتھا کہ ’’میں جانتاہوں سیاست ایک مشکل شعبہ ہے ،لیکن تاریخ گواہی د ے گی کہ شریف فیملی صرف نام کی ہی شریف نہیں ہے بلکہ ہمارے خلاف کوئی گندگی نہیں ہے ،یہ پوری دنیا جانتی ہے کہ پاناما کیس یہودیوں کی سازش ہے ،مجھ پر اعتبار کیجیے کیونکہ میں 206ممالک گھوم چکا ہوں اور میں نے خود لوگوں سے اس کے بارے میں پوچھا ہے۔‘‘
جنید صفدر کا کہناتھا کہ ’’الحمدواللہ میرے لیے بہت سارے مواقع موجود ہیں لیکن میں سیاست کا انتخاب کیاہے ،میرے انکل حسین نواز اور حسن نواز نے مجھے پیشکش کی کہ وہ اپنا کاروبار سنبھالے اور اچھے پیسے کمائے لیکن میں نے انہیں منع کر دیا ،کیا آپ جانتے ہیں میں نے ایسا کیوں کیا ؟کیونکہ میں اپنے ملک پاکستان کے لوگوں کیلئے کچھ کرنا چاہتا ہوں اور جو کچھ میرے نانا کے ساتھ ہوا میں اس سے بھی ڈر گیا ہوں۔‘‘

اپنا تبصرہ بھیجیں