سپریم کورٹ میں پاناما عملدرآمد کیس کی سماعت کے دوران جسٹس اعجازافضل نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ بچے اگر فنڈز کے ذرائع ثابت کر دیتے تو سب بری ہوجاتے

اسلام آباد (ڈسٹی نیوز)سپریم کورٹ میں پاناما عملدرآمد کیس کی سماعت کے دوران جسٹس اعجازافضل نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ بچے اگر فنڈز کے ذرائع ثابت کر دیتے تو سب بری ہوجاتے ، بچے فنڈز کے ذرائع ثابت نہ کر سکے تو اثر عوامی عہدہ رکھنے والے پر بھی ہوگا۔
کیس کی سماعت کے دوران جسٹس عظمت سعید شیخ نے وزیر اعظم کے بچوں کے وکیل سلمان اکرم راجہ سے کہا آپ کہہ رہے ہیں حسن ، حسین اور مریم کے اکاؤنٹس میں رقم آئی اور آپ کو رقم کی منتقلی کے ذرائع معلوم نہیں؟۔ رقم کہاں سے آئی ، اس کا جواب نہ ادھر سے آتا ہے نہ ادھر سے آتا ہے، میرے اکاؤنٹ میں پیسے آجائیں تو مجھے مصیبت پڑ جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں