داعش کی جانب سے جاری فتویٰ میں کہا گیا ہے کہ جنگجوؤں کے بیوی بچے مشن کی راہ میں رکاوٹ بن سکتے ہیں اس لیے انہیں مار دیا جائے۔

موصل (سٹی نیوز) عالمی دہشتگرد تنظیم داعش نے اپنے کارندوں کو اپنے پیاروں کو قتل کرنے کا حکم دے دیا۔ داعش کی جانب سے جاری فتویٰ میں کہا گیا ہے کہ جنگجوؤں کے بیوی بچے مشن کی راہ میں رکاوٹ بن سکتے ہیں اس لیے انہیں مار دیا جائے۔
عراقی حکومت کے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ داعش کی جانب سے فتویٰ جاری کیا گیا ہے جس میں جنگجو?ؤں کو اپنے پیاروں کو قتل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ فتویٰ میں کہا گیا ہے کہ جنگجوؤں کے پیارے تنظیمی مقاصد کی تکمیل کی راہ میں رکاوٹ بن سکتے ہیں اور ان کی وجہ سے داعش کو علاقے پر قبضہ کرنے میں مشکلات پیش آ سکتی ہیں۔عراقی نیوز ایجنسی السومریہ نے دعویٰ کیا ہے کہ داعش موصل کے مغربی شہر تل عفر میں پہلے ہی اپنے متعدد کارندوں کو اپنے ہی ہاتھوں ہلاک کرچکی ہے۔
واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے عراقی فورسز نے نو ماہ کی طویل جنگ کے بعد اہم ترین شہر اور داعش کے گڑھ موصل کا قبضہ حاصل کیا ہے۔موصل کا قبضہ ختم ہونے کے بعد داعش کو کافی نقصان پہنچا ہے اور یہ تنظیم اندرونی طور پر شکست و ریخت کا شکار ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں