امریکی محکمہ دفاع نے پاکستان کو سال 2016 کے لئے مختص کی گئی فوجی امداد کی مد دمیں باقی رہ جانے والی 350 ملین ڈالر کی خطیر رقم فراہم نہ کرنے کا فیصلہ کیا

واشنگٹن(ویب ڈیسک) امریکی محکمہ دفاع نے پاکستان کو سال 2016 کے لئے مختص کی گئی فوجی امداد کی مد دمیں باقی رہ جانے والی 350 ملین ڈالر کی خطیر رقم فراہم نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
یہ فیصلہ امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس کی جانب سے کانگریس کو دی جانے والی وضاحت کے بعد کیا گیا جس میں انہوں نے کہا کہ پاکستان نے حقانی نیٹ ورک کے خلاف موثر کارروائی نہیں کی۔ ترجمان کے مطابق پاکستان کو فوجی امداد کی مد میں مختص رقم ادا نہیں کی جائے گی کیونکہ اسلام آباد نے 2016 میں حقانی نیٹ ورک کے خلاف نیشنل ڈیفنس اتھورائزیشن ایکٹ کے مطابق کارروائی نہیں کی۔پینٹاگون کی جانب یہ فیصلہ ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پاکستانی سرحد سے افغانستان پر حملے کرنے والے شدت پسندوں کے خلاف سخت کارروائی کے لئے اسلام آباد پر دبا ؤ بڑھانے کا سوچ رہے ہیں۔
امریکہ کے ڈیفنس سیکرٹری جم مٹیس کا کہنا تھا کہ پاکستان کی مالی سال2016کی فوجی امدادروک لی گئی ہے، یہ اقدام انہوں نے حقانی نیٹ ورک کے خلاف موثر اقدام نہ کرنے پر اٹھایا گیا۔واضح رہے کہ پاکستان کو یہ امدادنیشنل دفاعی اجازت نامے کے تحت مل رہی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں