وزارت تجارت نے نئی تجارتی پالیسی کے حوالے سے ایک اور مہلت مانگ لی

اسلام آباد: (سٹی نیوز) وزارت تجارت نے ستمبر کے پہلے ہفتے تک نئی تجارتی پالیسی کے حوالے سے ایک اور مہلت مانگ لی، وزیراعظم آفس کو آئندہ ماہ کے اوائل میں پالیسی وفاقی کابینہ میں پیش کرنے کی یقین دہانی کرا دی گئی۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے حال ہی میں تجارتی پالیسی میں تاخیر کا نوٹس لیا تھا اور جون کے آخر تک منظوری کیلئے پیش کرنے کی ہدایت کی تھی تاہم وزارت تجارت 30 جون تک پالیسی منظوری کیلئے پیش میں ناکام رہی۔

مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے وزیراعظم سے دس جولائی تک وقت دینے کی درخواست کی جس کی وزیراعظم نے اجازت دیدی تھی، مگر اس دوران بھی تجارتی پالیسی کو حتمی شکل نہیں دی جا سکی۔

بعد ازاں وزارت تجارت پالیسی میں تاخیر پر وقت مانگتا رہا اور تاحال پالیسی کو فائنل نہیں کیا جا سکا ہے۔ حکومت نے رواں مالی سال کیلئے برآمدات کا ہدف 22 ارب 71 کروڑ 40 لاکھ ڈالر مقرر کیا ہے جبکہ ملکی برآمدات چار سال کی کم ترین سطح تک گر گئی ہیں۔

ذرائع کے مطابق تجارتی پالیسی کے تحت دو ہزار پچیس تک برآمدات چھالیس ارب ڈالرز تک لے جانے کا پلان تھا، تاہم نئے پلان کے تحت برآمدات کا ہدف کم کرنے کی تجویز ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں