مزاحیہ اداکار جمشید انصاری کو مداحوں سے بچھڑے 15 برس بیت گئے

کراچی: (سٹی نیوز) ریڈیو اور ٹی وی کے ہر دلعزیز مزاحیہ اداکار جمشید انصاری کو مداحوں سے بچھڑے 15 برس بیت گئے، شاندار فنی خدمات کے سبب آج بھی پرستاروں‌ کی یادوں میں‌ زندہ ہیں

جمشید انصاری پاکستانی ٹیلی ویژن کے مایہ ناز اداکار تھے، کامیڈی کرداروں میں جمشید انصاری اپنے برجستہ جملوں اور بے ساختہ انداز کے باعث جان ڈال دیتے تھے۔ 1942 میں برٹش انڈیا میں آنکھ کھولنے والے جمشید انصاری 1948 میں خاندان سمیت ہجرت کر کے پاکستان آ بسے۔ فنی کیرئر کا آغاز ریڈیو پاکستان سے کیا۔ 1968 میں پی ٹی وی پر جلوہ گر ہوئے۔ اپنے 40 سالہ فنی کیرئر میں جمشید انصاری نے 200 ڈرامے کیے جبکہ تین فلموں اور متعدد ریڈیو اور اسٹیج شوز بھی ان کے کریڈٹ پر ہیں۔

ستر کی دہائی میں پی ٹی وی پر نشر ہونے والے ڈرامہ سیریل انکل عرفی میں ان کے کردار حسنات بھائی نے انہیں شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا۔ ان کے مشہور ڈراموں میں جھروکے، انکل عرفی، زیر زبر پیش، کرن کہانی، ان کہی، تنہائیاں، ہاف پلیٹ اور دیگر شامل ہیں۔

ملک اور بیرون ملک اپنے کروڑوں مداحوں کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھیرنے والا یہ عظیم فنکار 24 اگست 2005 کو برین ٹیومر کے باعث کراچی میں دار فانی سے کوچ کر گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں