”کلبھوشن کی ماں نے مراٹھی میں بات شروع کی تو۔۔۔“ بھارتی میڈیا نے نیا ”شوشہ“ چھوڑ دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان نے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر سزائے موت پانے والے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کی والدہ اور اہلیہ سے ملاقات کرائی جو بھارت کو ہضم ہونے میں نہیں آ رہی ہے اور بھارتی میڈیا نے اس میں سے بھی سازش کے پہلو نکالنے اور زہر اگلنا شروع کر دیا ہے۔

بھارتی میڈیا نے ایک اور الزام عائد کیا ہے کہ ملاقات کے دوران بھارتی جاسوس کی والدہ نے اپنی مادری زبان مراٹھی میں بات کرنا شروع کی تو انہیں روک دیا گیا اور انگریزی زبان میں گفتگو کرنے کی ہدایت کی گئی۔ یادیو کی اہلیہ کا جوتا بار بارمانگنے کے بعد بھی واپس نہیں کیا گیا۔
بھارتی میڈیا نے اپنی رپورٹ میں کہا ”بھارت کے دباؤاور بین الاقوامی سطح پر ہونے والی ’تھو تھو‘ کے بعد پاکستان نے کلبھوشن کی والدہ اور اہلیہ سے ملاقات تو کرا دی مگر ساتھ ہی ایسے حالات بھی پیدا کر دئیے کہ دونوں خواتین ملاقات کے وقت تڑپتی رہیں۔“

بھارت کے اس الزام پر صرف ہنسی ہی آ سکتی ہے کیونکہ پاکستان کئی بار یہ واضح کر چکا ہے کہ یہ ملاقات صرف اور صرف انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر کرائی گئی ہے اور اس معاملے پر کسی کا کوئی دباؤنہیں جبکہ یہ بھی سب ہی جانتے ہیں کہ کلبھوشن کے پکڑے جانے کے بعد پوری دنیا میں ”تھو تھو“ کس پر ہو رہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں