کرکٹ کے مداحوں کے لیے اپنے خوابوں کی جوڑیاں بنانے کا موقع

لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ بورڈ اپنے مداحوں کے لیے ایک ایسی پر جوش مہم کا آغاز کر رہا ہے جہاں شائقین کرکٹ کو اپنے خوابوں کو پسندیدہ جوڑیاں بنانے کا موقع فراہم کیا جا رہا ہے، یہ مہم بدھ کو دوپہر دو بجے شروع ہو گی۔

اس مہم کے تحت مداحوں کو بیٹنگ (اوپنرز اور مڈل آرڈرز) اور باؤلنگ (فاسٹ باؤلرز اور سپنرز) میں اپنی پسندیدہ ٹیسٹ کرکٹ جوڑیوں کے انتخاب کا موقع دیا جا رہا ہے جو فیس بک، ٹویٹر اور انسٹا گرام پر اپنی پسندیدہ جوڑیاں بنا کر اس مہم کا حصہ بن سکتے ہیں، مہم کے اختتام پر مداحوں کو ٹیسٹ کرکٹ میں اپنے پسندیدہ وکٹ کیپر کے انتخاب کا موقع بھی دیا جائے گا۔

کھیل کے سب سے معتبر فارمیٹ (ٹیسٹ کرکٹ) میں پاکستان نے بہت سے عظیم ستارے اور لیجنڈز پیدا کیے ہیں، اس حوالے سے کھلاڑیوں کے نام ایک مخصوص پوزیشن پر ان کے رنز بنانے اور وکٹیں حاصل کرنے کی تعداد کی بنیاد پر شارٹ لسٹ کیے گئے ہیں۔

اس حوالے سے مزید تفصیلات مندرجہ ذیل ہیں۔

اوپننگ بیٹسمین (پہلی اور دوسری پوزیشنز) کے لیے ایک ہزار ٹیسٹ رنز بطور اوپنرز۔

مڈل آرڈر بیٹسمین (تیسری سے ساتویں پوزیشنز) کے لیے اڑھائی ہزار ٹیسٹ رنز بطور مڈل آرڈر بیٹسمین

فاسٹ باؤلرز کے لیے کم از کم 75 ٹیسٹ وکٹیں

اسپنرز کے لیے کم از کم 75 ٹیسٹ وکٹیں

وکٹ کیپرز کے لیے ٹیسٹ کرکٹ میں کم از کم 50 شکار

ماضی میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے عمدہ بلے باز اور 24 سنچریاں بنانے والے سابق ٹیسٹ کرکٹر محمد یوسف کا کہنا ہے کہ یہ پی سی بی کی جانب سے اٹھایا گیا ایک شاندار قدم ہے جو ہمارے نوجوان اور پر جوش مداحوں کو کھیل کے لیجنڈز سے آگاہی کے ساتھ ساتھ ان آزمائشی اوقات میں گھروں میں رہتے ہوئے مصروفیات کا ایک موقع فراہم کر رہا ہے۔

پاکستان میں کھیلے گئے تینوں ٹیسٹ مچیز میں سنچری بنانے والے قومی ٹیسٹ کرکٹر بابر اعظم کا کہنا ہے کہ پاکستان نے ماضی میں بہت سے ایسے ٹیسٹ بلے باز پیدا کیے ہیں جو ہوم اینڈ اوے کنڈیشنز سے قطع نظر، پیس اور سپن دونوں طرح کی باؤلنگ کے سامنے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ٹیسٹ کرکٹ میں محمد یوسف اور یونس خان پر مشتمل جوڑی میری پسندیدہ ہے، یوسف بھائی کی اسکلز اور کلاس جبکہ یونس بھائی کے کبھی بھی ہار نہ ماننے والے مائنڈ سیٹ سے ہمارے جیسے کرکٹرز نے بہت کچھ سیکھا ہے اور دونوں سابق کرکٹرز کے تجربے سے سیکھنے کا یہ عمل جاری رہے گا۔

اپنی شاندار سپین باؤلنگ سے متعدد ٹیسٹ میچز میں پاکستان کو کامیابیاں دلانے والے سابق کرکٹر سعید اجمل کا کہنا ہے کہ اکثر کہا جاتا ہے کہ باؤلرز جوڑوں کی صورت میں شکار کرتے ہیں اور ہم نے میدان میں ایسا دکھایا بھی ہے، مجھے پاکستان کے چند بہترین سپنرز کے ساتھ باؤلنگ کرنے کا موقع ملا ہے اور ان کے ساتھ مل کر پاکستان کو فتوحال دلانے میں بھی کامیاب رہا ہوں۔

سابق ٹیسٹ سپنر کا کہنا تھا کہ اگر مجھ سے پوچھا جائے تو لیجنڈری باؤلر مرحوم عبد القادر کے ساتھ باؤلنگ کرنا پسند کرتے، عبد القادر مرحوم ایک عظیم لیگ سپنر تھے، جن کی گگلی شاندار تھی اور میرے پاس دوسرا جیسا ہتھیار تھا لہٰذا یہ جوڑی بہترین ہوتی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں