علاج بلغذاکے تحت معالجہ کرنے والے بہت سے اطبا ابھی تک موجود ہیں جونباض وقت بھی ہیں اور نبض پر ہاتھ رکھ کر مریض کا مزاج جاننے کے بعد اسکا علاج شروع کرتے ہیں

لاہور(سٹی نیوز)طب یونانی کا یہ کمال اور اسکی افادیت ہے کہ یہ انسان کے مادی و روحانی اجسام کی حرارت کو سامنے رکھ کر ادویہ تجویز کرتی ہے۔سب تو نہیں لیکن علاج بلغذاکے تحت معالجہ کرنے والے بہت سے اطبا ابھی تک موجود ہیں جونباض وقت بھی ہیں اور نبض پر ہاتھ رکھ کر مریض کا مزاج جاننے کے بعد اسکا علاج شروع کرتے ہیں۔زیادہ تر لوگ اپنے مزاج کے برعکس مثلاً اگر ان کا مزاج سرد خشک ہے تو وہ زیادہ تر غذائیں بھی سرد اور خشک مزاج والی کھاتے ہیں،جن کا مزاج گرم اور تر ہووہ گرم اور تر اشیا سے رغبت رکھتے ہیں حالانکہ یہ غذائیں اسکے مزاج اور بدن کی ضرورت کے خلاف ہوتی ہیں اوراسی وجہ سے وہ عام لوگوں کی نسبت زیادہ بیمار ہوتے ہیں۔خاص طور ان کا نظام ہضم خراب رہتاہے۔دردیں،بلڈ پریشر اور شوگر بھی بہت جلد لاحق ہونے کی یہی وجہ ہے۔لہذا ساری عمر ہسپتالوں ،میڈیکل ٹیسٹوں اور ڈاکٹروں کے گرد گھوم کر زندگی غارت کرنے سے پہلے ایک بار کسی نباض وقت حاذق طبیب سے اپنے مزاج کے مطابق غذاؤں کا چارٹ ضرور بنوا لیں اور اس پر عمل کرکے دیکھیں تو آپ کی صحت اور طبیعت میں یکایک پائیدار تبدیلی آجائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں