’میں بتانا چاہتی ہوں کہ میرا بار بار ریپ کیا گیا اور وہ بھی اس شخص کی جانب سے جو۔۔۔‘ معروف خاتون صحافی نے ایسا انکشاف کردیا کہ ہر کسی کو ہلا کر رکھ دیا

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ دنوں 79سالہ آسٹریلوی مصنف جرمین گریئر نے خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی کے مرتکب مردوں کو قید کی سزا نہ دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’ہمیں جنسی زیادتی کو جرم کے زمرے میں نہیں لانا چاہیے کیونکہ یہ ریپ نہیں بلکہ ایک برا جنسی فعل ہوتا ہے اور اس سے متاثرہ خواتین کو کوئی ذہنی صدمہ نہیں پہنچتا، اس کے مرتکب شخص کو صرف کمیونٹی سروس کی سزا دینی چاہیے، قید نہیں۔‘جرمین گریئر کے اس بیان پر دنیا بھر سے شدید ردعمل سامنے آ رہا ہے اور سکائی سپورٹس کی معروف میزبان چارلی ویبسٹر نے جرمین کو کھری کھری سناتے ہوئے اپنے ساتھ جنسی زیادتی کا پیش آنے والاایسا واقعہ بتا دیا ہے کہ ہر سننے والا ہل کر رہ جائے۔ میل آن لائن کے مطابق 35سالہ چارلی نے ریڈیو 5سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’میں جرمین گریئر کو بتانا چاہتی ہوں کہ جب میں صرف 15سال کی تھی تب مجھے بار بار جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور وہ بھی ایسے شخص نے، جس پر میں بے حد اعتبار کرتی تھی۔‘‘
چارلی کا کہنا تھا کہ ’’یہ شخص میرا رننگ کوچ تھا۔ ہر کوئی اپنے کوچ سے قربت رکھتا ہے چنانچہ میں بھی اس کے کافی قریب آ گئی تھی جس کا اس نے ناجائز فائدہ اٹھایا۔ اس نے مجھے اکیلے میں سیشن دینے کے لیے تنہائی میں لیجانا شروع کر دیا۔ پھر ایک روز وہ مجھے ایسی جگہ لے گیا جہاں ہم دونوں کے علاوہ کوئی نہ تھا اور وہاں اس نے مجھے پہلی بار جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔ اس کے بعد بھی یہ کئی بار ہوا،پھر میں اس کے خلاف پولیس کے پاس گئی اور اسے عدالت سے 10سال قید کی سزا ہوئی۔ اس شخص کی ہوس کی وجہ سے مجھے جس ذہنی صدمے سے دوچار ہونا پڑا، آج بھی اس کے اثرات مجھ پر ہیں اور شاید تمام عمر رہیں گے۔ اس کے بعد سے مجھے لوگوں پر اعتبار نہیں رہا، مجھ میں خوداعتمادی کا فقدان ہو گیا ہے۔ میں جرمین گریئر کو ایسی سینکڑوں مثالیں دے سکتی ہوں جو ثابت کر سکتی ہیں کہ ان کا بیان کتنا جاہلانہ اور گمراہ کن ہے۔‘‘

اپنا تبصرہ بھیجیں