کرتارپورکوریڈورکی تعمیر کا 90 فیصد کام مکمل

لاہور: کرتار پور کوریڈر کی تعمیر کا 90 فیصد کام مکمل کرلیا گیا اور شیڈول کے مطابق 9 نومبر کو بھارت سے پہلا جتھہ ویزا فری کوریڈور کے راستے پاکستان پہنچے گا۔

پاکستان نے اپنی حدود میں کوریڈورکا 90 فیصد کام مکمل کرلیا ہے اور اگست کے وسط میں رنگ وروغن کا کام شروع ہوجائے گا، گوردوارہ دربار صاحب کرتارپور کے گرنتھی سردار گوبند سنگھ نے بتایا کہ دنیا بھرمیں بسنے والے سکھ اس سال 2 خوشیاں منانے جارہے ہیں، ایک تو گورو نانک دیو جی کا 550 واں پرکاش پرب اور دوسرا کرتارپور راہداری کی تعمیر۔

سردار گوبند سنگھ نے تصدیق کی کہ 9 نومبر کو بھارت سے پہلا جتھہ اس ویزا فری راہداری کے راستے پاکستان آئے گا تاہم انہوں نے جتھے کے شرکا کی تعداد نہیں بتائی ہے۔ وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ راہداری کا افتتاح اور بھارتی جتھے کا خیر مقدم کریں۔ آج بھی چند عناصر جو اس منصوبے کے خلاف ہیں وہ پراپیگنڈا کرتے ہیں کہ یہاں پرانی تاریخی عمارت کو نقصان پہنچایا گیا اور کئی تاریخی مقامات ختم کردیئے گئے ہیں ۔یہ پراپیگنڈہ بے بنیاد ہے۔ گوردوارہ صاحب کی اصل عمارت آج بھی تاج محل کی مانند کھڑی ہے۔ اس کی تزئین و آرائش کی گئی ہے، کنواں صاحب اور آم کے درختوں کو بھی پہلے کی طرح محفوظ رکھا گیا ہے۔
منصوبے پر کام کرنے والے سائیٹ انجینئر علیم اکرم نے بتایا کہ یہاں بنائی گئی مختلف عمارتوں میں الیکٹرک ورک مکمل ہوگیا ہے اور فرش پر ٹائلیں اور ماربل لگایا جارہا ہے۔ میوزیم، لائبریری، لنگرہال، مہمان خانہ اور صنوبر کا 90 فیصد کام مکمل ہوچکا ہے، کورٹ یارڈ میں 16 آرسی سی پینل ہیں جہاں اب سفید ماربل لگنا شروع ہوگیا ہے۔ مرکزی سڑک بھی مکمل ہوگئی ہے۔ عمارت میں آئندہ دوہفتوں کے دوران رنگ و روغن شروع ہوجائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ کھیتی صاحب میں جو پودے لگائے گئے تھے وہ اگنا شروع ہوگئے ہیں۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ یہ منصوبہ ٹائم فریم سے پہلے مکمل ہوجائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں