پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں من پسند افراد کی تعیناتیاں

پشاور: 6 سینئر ڈاکٹرز ہسپتال چھوڑ گئے۔ ایم ٹی آئی ایکٹ کی ضلعی سطح پر منتقلی کے خلاف ڈاکٹرز تنظیمیں بھی میدان میں نکل آئیں۔
پشاور کے سب سے بڑے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں انتظامی عہدوں کی بندر بانٹ کے خلاف کئی سینئر ڈاکٹرز ہسپتال چھوڑ گئے۔ چار ماہ کے دوران ایل آر ایچ چھوڑنے والے ڈاکٹرز کی تعداد چھ ہو گئی۔
گریڈ 19 اور 20 کے سینئر ڈاکٹرز کی موجودگی میں انگلینڈ سے آئے جونیئر ڈاکٹر کو میڈیکل ڈائریکٹر تعینات کر دیا گیا۔ سینئر ڈاکٹر جاوید اقبال مدت ملازمت سے پانچ سال پہلے ہی مستعفی ہو گئے۔ سینئر ڈاکٹر انتخاب عالم ڈاکٹر مظفر الدین، نیورو سرجن ڈاکٹر ممتاز، ڈاکٹر خلیل اور ڈاکٹر مقیم پہلے ہی رخصت لے چکے ہیں۔
دوسری جانب ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے قیام اور میڈیکل اینڈ ٹیچنگ انسٹی ٹیوشن ایکٹ کی اضلاع تک منتقلی کے خلاف ڈاکٹروں تنظیموں نے بھی ایکا کر لیا ہے۔
پریس کلب میں خیبر پختونخوا ڈاکٹرز کونسل کی مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران ڈاکٹروں نے مشاورت کے بغیر ایسے فیصلوں کو مسترد کر دیا ہے۔ ڈاکٹرز تنظیموں نے 17 اپریل کو اہم اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔
خیبر پختونخوا حکومت ڈاکٹروں کے تحفظات دور کرنے میں ناکام رہی ہے۔ ایم ٹی آئی ایکٹ ہو یا دیگر معاملات ڈاکٹروں کا شکوہ ہے کہ ان سے کوئی مشاورت نہیں کی جاتی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں