شام میں لڑنے والی اس خاتون کو قتل کردیا گیا، لیکن پھر اس کی لاش کے ساتھ کیاکیا گیا؟ ایسی خوفناک ترین ویڈیو منظر عام پر کہ پوری دنیا کانپ اُٹھی، تصور بھی نہ کیا جاسکتا تھا کہ کوئی یہ کام بھی کرسکتا ہے

دمشق(ویب ڈیسک) شمالی شام کے کرد علاقے پر ترکی کے حملے کے باعث مقامی کردوں میں غم و غصے کی لہر تو پہلے ہی موجود تھی لیکن حال ہی میں ترک حمایت یافتہ باغیوں کے ہاتھوں ہلاک ہونے والی ایک خاتون کرد جنگجو کی مسخ شدہ لاش کی ویڈیو سامنے آنے پر پورے کرد علاقے میں سخت ہنگامہ برپاہوگیا ہے۔
دی انڈیپینڈنٹ کے مطابق اس خاتون جنگجو کا نام بارن کوبانی ہے اور وہ کردش پیپلز پروٹیکشن یونٹ (وائی پی جی) کی رکن تھی۔اسے عفرین کے علاقے میں باغیوں کے حملے کے دوران ہلاک کیا گیا۔ ویڈیو میں بارن کوبانی کی لاش کی بے حرمتی کے مناظر دکھائے گئے ہیں جبکہ لاش کے قریب جشن مناتے باغی بھی دکھائی دیتے ہیں۔
شامی کرد کمیونٹی کا کہنا ہے کہ بارن کوبانی کی لاش کو ان باغیوں نے مسخ کیا اور پھر اس لرزہ خیز واقعے کی ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر پوسٹ کی۔ وائی پی جی ملیشیا کی جانب سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا کہ بارن کوبانی کی موت اور اس کی لاش کی بے حرمتی کے ذمہ داران سے بدلہ لیا جائے گا۔ ملیشیا کے ترجمان احمد کندال کا کہنا تھا ”بارن نے ہتھیار نہیں ڈالے۔ وہ لڑتے لڑتے موت سے ہمکنار ہوئی۔ ہم مزاحمت کے لئے پرعزم ہیں اور اس طرح کے واقعات ہمارے اس عزم کو اور مضبوط کرتے ہیں کہ ہم فتح تک لڑتے رہیں گے۔“

اپنا تبصرہ بھیجیں