توہین عدالت کیس، سپریم کورٹ نے طلال چوہدری کی بات ماننے سے صاف انکار کردیا، پہلی ہی پیشی پر بڑا جھٹکا دیدیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)سپریم کورٹ نے توہین عدالت کیس میں وفاقی وزیر مملکت طلال چودھری کی وکیل کرنے کیلئے 3 ہفتے کی مہلت کی استدعا مسترد کر دی اور انہیں شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کردی۔
تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں وفاقی وزیر مملکت طلال چودھری کیخلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں جسٹس مقبول باقر اور جسٹس فیصل عرب پر مشتمل3 رکنی بنچ نے سماعت کی۔
دوران سماعت وفاقی وزیر مملکت نے عدالت سے استدعا کی کہ انہیں وکیل کرنے کیلئے 3 ہفتے کاوقت دیاجائے،اس پر جسٹس اعجاز افضل نے کہا کہ کیوں نہ آپ کو 3 ہفتے کی بجائے 3 سال کا وقت دے دیں،آپ بتائیں وکیل مقررکرنے کیلئے کتناوقت چاہئے۔
اس پر طلال چودھری نے کہا کہ سپریم کورٹ میں وکیل مصروف ہوتے ہیں،اس لیے وقت چاہئے،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کیوں نہ طلال چودھری کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے،اعلیٰ عدلیہ نے وفاقی وزیر مملکت کی 3 ہفتے کی استدعا مسترد کر دی اور انہیں شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت منگل تک ملتوی کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں