فائرنگ آرڈر کا اختیار مجسٹریٹ کو دیا جائے: رپورٹ میں تجویز

لاہور (ویب ڈیسک) جسٹس باقر نجفی رپورٹ میں سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے بعد تجویز دی گئی ہے کہ پولیس سے فائرنگ کا حکم دینے کی اجازت واپس لے کر متعلقہ مجسٹریٹ کو اختیار تفویض کئے جائیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کسی بھی پولیس افسر نے نہیں بتایا کہ انہوں نے کسی کے حکم پر فائرنگ کی۔ پولیس افسران نے سچ چھپانے کی کوشش کی، تمام افسران ایک دوسرے کو بچانے کی کوشش کررہے تھے۔ قانون کے مطابق اے ایس پی یا ڈی ایس پی رینک کا افسر فائرنگ کا حکم دے سکتا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کسی پولیس افسر نے فائرنگ کی ذمہ داری ظاہرنہیں کی۔ اس لئے ضروری ہے کہ فائرنگ کا حکم دینے کی اجازت پولیس سے واپس لے کر متعلقہ مجسٹریٹ کو اختیار تفویض کئے جائیں تاکہ مستقبل میں حقائق تک پہنچنے میں آسانی ہو۔

اپنا تبصرہ بھیجیں