ولید بن طلال کے ٹرمپ کی بیٹی سے مبینہ تعلقات، امریکی لڑکیاں بھی پیسے پر مرتی ہیں: ضیاء شاہد

لاہور (ویب ڈیسک)صحافی و تجزیہ کار ضیا شاہد نے کہا ہے کہ پیراڈائز لیکس میں ملکہ اردن، برطانیہ اور سعودی شہزادوں کے نام بھی آگئے ہیں، غلط کام کرنے والوں کو پکڑنے کے اعلان پر سب نے سعودی بادشاہ کی واہ واہ کی، سعودی عرب میں عام شرتہ بھی کسی کو پکڑ لے تو کوئی چھڑا نہیں سکتا، ہم سب سعودی عرب اور ان کے قانون کا احترام کرتے ہیں، سوشل میڈیا پر کچھ لوگوں کاکہناہے کہ سیاسی انتقال کیلئے شہزادوں کو پکڑا گیا ، ولید بن طلال سے ٹرمپ کی بیٹی کے مبینہ طورپر تعلقات ہیں ، امریکی لڑکیاں بھی پیسے پر مرتی ہیں ، سعودی بادشاہ کا اپنا نام بھی پیراڈائز لیکس میں آیا ہے اور مجھے یقین ہے کہ مغربی میڈیا اس کی اندرونی کہانی ضرور سامنے لائے گا۔

پیراڈائز لیکس میں بہت بڑے بڑے لوگوں کے نام آئے ہیں برطانیہ کی ملکہ، اردن کی ملکہ , سعودی فرمانروا ، سعودی اور قطر ی شہزادوں کے نام بھی آ گئے ہیں، قطری شہزادہ بھی اپنے ملک سے پیسہ باہر لے گئے اس حمام میں سب ننگے ہیں۔ میڈونا کو ان لوگوں میں شامل کرنا درست نہیں اس نے تو ناچ گانا کر کے لوگوں کی جیب سے پیسے حاصل کئے۔ اس کے مقابلے میں وزیراعظم، وزیرخزانہ، وزیر خارجہ، ملکہ، شہزادے، ٹرمپ کے 11 ساتھی وہ لوگ ہیں جنہیں لوگ اپنے مفاد کے لئے آگے لاتے ہیں اور امانت دار بناتے ہیں امریکہ میں کانگریس اہلکار وزیر نہیں بن سکتے۔ صدر اپنی مرضی سے شفاف اور دیانت دار لوگوں کو آگے لاتا ہے۔ سعودی عرب کا ہم سب احترام کرتے ہیں۔ ان کے اداروں کا احترام کرتے ہی میری فیملی 20 سال مدینہ منورہ میں رہی۔ وہاں ایک عام شرتہ کسی کو پکڑے تو اسے کوئی چھڑوا نہیں سکتا۔ افسوس ہوا یہ سن کر کہ وہاں کے شہزادوں اور بادشاہ کے بچوں اور رشتہ داروں کے نام بھی اس لیکس میں آ گئے ہیں۔ سعودی عرب میں مقامات مقدسہ ہیں۔ وہاں کے امام کا بھی ہم بہت احترام کرتے ہیں اگر وہ امام یہاں آ جائیں تو ہم خوش قسمتی سمجھتے ہیں کہ ان کے پیچھے نماز پڑھیں دنیا کے بڑے بڑے کاروبار ان شہزادوں کے ہاتھ میں ہیں۔ پراپرٹی ہو چاول کی درآمد ہو یا کوئی اور بڑا کاروبار پوری دنیا میں سعودی شہزادوں کے کاروبار پھیلے ہوئے ہیں۔ جب ٹرمپ آیا تو سعودی فرماروا اسے چھوڑ کر نماز پڑھتے چلے گئے۔ ہم انہیں اس احترام کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ ہم خوش تھے کہ سعودی فرماروا نے جن کو پکڑا ہے وہ سیاسی اختلاف نہیں بلکہ شہنشاہی اختلاف ہے ۔ سوشل میڈیا پر یہ عام بات ہےکہ سیاسی مقاصد کیلئے ان لوگوں کو پکڑا گیا ہے۔ اگر ان مقاصد کے لئے نہیں بھی پکڑا گیا تو ہم واہ واہ کر رہے تھے کہ سعودی فرما روا نے کمال بیان دیا ہے کہ جو بھی غلط کرے گا میں اس کو پکڑوں گا۔ ان کے اپنے بارے میں کیا خیال ہے، فارن میڈیا ضرور مزید کھوج نکال لے گا کہ سعودی شہزادے طلال ولید کا اصل قصہ کیا ہے۔ ٹرمپ کی بیٹی، امریکہ میں وسیع کاروبار انہی شہزادے کا ہے ،اصل دلکشی مال کی ہوتی ہے۔ امریکی خاتون صدر کی بیٹی ہو یا ملکہ یا کوئی اور شہزادی وہ بھی مال پر مرتی ہے۔ گجرات کے ایک فراڈیے کے بہت قصے مشہور ہوئے۔ اس کے بہت بڑے بڑے کاروبار تھے جہاز بھی کھڑے تھے اور نہ جانے کیا کیا تھا۔ وہ بری شکل کا آدمی تھا لیکن عورتیں اس پر مرتی تھیں، روپیہ سب کچھ چھپا لیتا ہے‘‘۔

اپنا تبصرہ بھیجیں