ای سی سی اجلاس: سٹیل مل کو تین ارب روپے کی نئی گرانٹ دینے سے انکار

اسلام آباد: (سٹی نیوز) اقتصادی رابطہ کمیٹی نے سٹیل مل کو 3 ارب روپے کی نئی گرانٹ دینے سے انکار کردیا گیا اور موقف اختیار کیا ہے کہ سٹیل مل کو پہلے ہی 4.2 ارب روپے کے فنڈز جاری ہوچکے ہیں۔

اسلام آباد میں مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا، سٹیل مل کو سوئی سدرن گیس کمپنی کے گیس بل واجبات دستیاب وسائل سے کرنے کی ہدایت بھی کی گئی۔

اجلاس میں یوٹیلٹی سٹورز کے ذمہ 5 ارب روپے کے قرض کی گارنٹی میں ایک سال کی توسیع کی منظوری دی گئی، واپڈا کو حبیب بینک سے 38 ارب روپے قرضہ لینے کیلئے گارنٹی کی منظوری بھی دی گئی، واپڈا نیٹ ہائیڈل پرافٹ کی سیٹلمنٹ کیلئے قرضہ حاصل کرے گا۔

ایکسچینج ریٹ میں ردوبدل سے پی ایس او کو 28 ارب روپے نقصان ہوا، ای سی سی نے نقصان کے ازالے کیلئے اضافی گرانٹ دینے سے انکار کردیا ہے اور فیصلہ کیا ہے کہ رقم موجودہ مالی سال کے بجٹ سے ہی ایڈجسٹ کرے۔ ای سی سی نے تاپی گیس پائپ لائن منصوبے کے ریٹ کے لیے کیلئے مذاکراتی کمیٹی تشکیل دیدی ، پانچ رکنی کمیٹی میں توانائی، خزانہ اور گیس کمپنیوں کے نمائندے بھی شریک ہوئے۔ ایک ارب روپے سے پاکستان ٹورازم ڈویلپمنٹ انڈومنٹ فنڈ کے قیام کی منظوری بھی دی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں