کالج سے فراغت کے بعد نوجوان لڑکی اغوا، 20 سال بعد کہاں سے اور کس جگہ پر ملی؟ جان کر ہر انسان کانپ اُٹھے

نئی دلی(ویب ڈیسک)انسان کے لئے محبت اور تحفظ کا سب سے بڑا ذریعہ اس کے اپنے گھر والے ہی ہوتے ہیں لیکن جس بدقسمت کے اپنے ہی اس کی زندگی برباد کرنے کے درپے ہو جائیں وہ کس سے فریاد کرے۔ بھارتی ریاست گووا میں پولیس نے ایک ایسی ہی بدنصیب خاتون کو اس کے اپنے گھر والوں کی قید سے بازیاب کروایاہے جسے اس کی ماں اور بھائی نے گزشتہ 20 سال سے ایک کمرے میں بند کررکھا تھا۔
ریاست گووا کے سانکلیم گاﺅں سے تعلق رکھنے والی یہ خاتون دو دہائیاں قبل کالج کی طالبہ تھی جب ایک روز وہ پراسرار طور پر لا پتہ ہو گئی۔ اسے ڈھونڈنے کی بہت کوششیں کی گئیں لیکن کچھ پتا نا چلا، اور پتا چلتا بھی کیسے کیونکہ اسے اس کی اپنی ماں اور بھائی نے گھر کے ایک کمرے میں قید کر دیا تھا۔
گزشتہ ہفتے اس خاتون کی ایک کزن نے پولیس کو اطلاع دی تھی جس پر کارروائی کرتے ہوئے اسے بازیاب کروایا گیا۔ جب اسے بازیاب کروایا گیا تو کمزوری اور بیماری کے باعث اس کی حالت ابتر ہوچکی تھی جس کے باعث اسے سیدھا ہسپتال لیجانا پڑا۔
بچولم پولیس سٹیشن کے انچارج سنجے دلوی کا کہنا تھا کہ خاتون کی حالت ابھی اس قابل نہیں ہے کہ اس سے بیان لیا جاسکے۔ جیسے ہی اس کی حالت کچھ بہتر ہوگی تو اس کا بیان لینے کے بعد ملزمان کے خلاف مزید کارروائی کی جا سکے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں