فرانس میں ان کے اعزاز میں منعقد تقریب میں سعودی ولی عہد نے فرانسیسی کھانے کے بارے میں ایسی بات کہہ دی کہ ہرکوئی ہنسنے پر مجبور ہوگیا

پیرس(ویب ڈیسک)سعودی عرب میں جاری حالیہ تبدیلیوں کی وجہ سے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان دنیا بھر میں مرکز نگاہ بنے ہوئے ہیں لیکن بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ وہ مزاحیہ طبیعت کے مالک ہیں اور اس کا ثبوت محمد بن سلمان نے فرانس کے دورے کے دوران اس وقت دیا جب انہوںنے کھانے کے دوران مزاحیہ انداز میں ایک قصہ سنا کر حاضرین کو بے اختیار ہنسنے پر مجبور کردیا ۔
ًتفصیل کے مطابق چند ر وز قبل سعودی ولی عہد دو ہفتے کے تاریخی دور پرامریکہ گئے تھے جہاں ریاست ٹیکساس میں ان کی ملاقات سابق امریکی صدور جارج بش اور جارج ڈبلیو بش کے ساتھ ہوئی ۔اس موقع پر دونوں باپ بیٹے نے سعودی ولی عہد کے لیے کھانے کا بھی اہتمام کیا اور انہیں باربی کیو ساس بھی تحفے میں دی تاکہ فرانس کے دورے کے دوران کھانا اچھا نہ لگنے کی صورت میں اس کا استعمال کیا جاسکے ۔
سعودی ولی عہد امریکہ سے فرانس پہنچے تو صدر ایمنول میکرون نے ان کے لیے شاندار دعوت کا اہتمام کیا ۔کھانے کے بعد سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے پیرس میں مقامی میڈیا سے فرنچ کھانوں کی تعریف کرتے ہوئے مذاق میں کہا کہ جب میں امریکہ کی ریاست ٹیکساس میں تھا تو فرانس روانہ ہوتے ہوئے انہوں نے مجھے سابق امریکی صدور نے باربی کیو ساس دی تھی اور کہا تھا کہ فرانس میں آپکو اِسکی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ شہزادہ سلمان کا کہنا تھا کہ بش سینئر اور جونیئر نے کہا تھا کہ اگر آپکو فرنچ کھانا پسند نہ آئے تو آپ باربی کیو ساس کا استعمال کر سکتے ہیںلیکن شکر ہے کہ فرانس آکر کھانا کھاتے ہوئے مجھے باربی کیو ساس استعمال کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئی۔محمد بن سلمان کی یہ بات سن کر سب ہنسنے لگے

اپنا تبصرہ بھیجیں