15 سال میں پہلی بار تنخواہوں پنشن میں اضافہ نہ ہوا

اسلام آباد: (سٹی نیوز) گزشتہ 15 سال میں پہلی بار وفاقی بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور ریٹائرڈ ملازمین کی پنشن میں اضافہ نہیں کیا گیا، 4 لاکھ روپے تک سالانہ آمدن رکھنے والے تنخواہ داروں پر انکم ٹیکس عائد نہیں ہوگا۔

وفاقی بجٹ 2020-21 میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور انکم ٹیکس کی شرح کو گزشتہ مالی سال کی سطح پر برقرار رکھا گیا ہے اور اس میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا ہے۔ موجودہ حکومت نے گزشتہ مالی سال 2019-20 کے بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 10 فیصد ایڈہاک ریلیف دیا تھا۔

سال 2010-11 میں پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں تنخواہوں میں سب سے زیادہ 50 فیصد اضافہ کیا گیا تھا۔ فنانس بل کے مطابق 4 لاکھ روپے تک سالانہ آمدن اور تنخواہ پر ٹیکس عائد نہیں ہوگا۔ 5 لاکھ تک سالانہ تنخواہ و آمدن پر2.5 فیصد، 5 لاکھ سے 10 لاکھ روپے تک تنخواہ و آمدن پر 5 فیصد، 10 لاکھ سے 15 لاکھ روپے تک تنخواہ و آمدن پر 7.5 اور 15 لاکھ سے زائد آمدن و تنخواہ پر 10 فیصد انکم ٹیکس عائد ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں