چین نے 5 بھارتی فوجی چھوڑ دیئے، سپانگورگیپ میں چینی توپخانہ پہنچ گیا

بیجنگ/ نئی دہلی: (سٹی مانیٹرنگ، اے ایف پی) چینی اخبار کا کہنا ہے کہ شکاریوں کے بھیس میں آنیوالے بھارتی تبت سرحد سے پکڑے گئے تھے۔ ادھر بھارت نے رہائی کی تصدیق کر دی ہے۔

تفصیل کے مطابق چین نے شکاریوں کے بھیس میں تبت سرحد پار کرتے حراست میں لئے جانیوالے 5 بھارتی فوجی چھوڑ دئیے ہیں۔ ترجمان بھارتی وزارت دفاع نے پانچوں شہری ملنے کی تصدیق کر دی ہے۔ نئی دہلی انتظامیہ کے مطابق رہائی پانیوالے شہریوں کو 14 روز قرنطینہ میں رکھنے کے بعد اہلخانہ کے حوالے کیا جائیگا۔

چینی اخبار گلوبل ٹائمز کے مطابق حراست میں لئے جانیوالے بھارتیوں کا تعلق انڈین انٹیلی جنس سے ہے اور وہ شکاریوں کے بھیس میں چینی علاقے میں داخل ہوئے جہاں سے انہیں چینی فورسز نے حراست میں لیا۔

دوسری طرف بھارتی اخبار نے رپورٹ دی کہ چین نے پانگونگ تسو جھیل کے مغربی علاقے سپانگور گیپ میں بھارتی فوج کے مدمقابل ٹینکوں اور توپوں سمیت ہزاروں فوجی تعینات کر دئیے، جس کے جواب میں بھارت نے بھی سپانگور گیپ میں فوج بڑھا دی ہے۔

بھارت کے حکومتی ذرائع کے مطابق دونوں ممالک کی فوجوں اور انکے توپ خانے کے درمیان شوٹنگ رینج کا فاصلہ ہے۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ چین نے بارڈر اور تبت کے خطے کو مستحکم کرنے کیلئے ملیشیا سکواڈ بھی تعینات کئے ہیں، انہیں یہ ذمہ داری سونپی گئی ہے کہ وہ ٹیکٹیکل بلندیوں سے بھارتی فوجیوں کو نکالنے کی کوشش کریں۔

اخبار کے مطابق چینی ملیشیا کوہ پیماؤں، باکسروں، مقامی فائٹ کلبوں اور دیگر شعبوں کے افراد پر مشتمل ہے جن کی اکثریت مقامی لوگوں پر مشتمل ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں