امریکہ میں ایک خاتون کے گھر کی چھت سے شہد ٹپکنے لگا

نیویارک (ویب ڈیسک) امریکہ میں ایک خاتون کے گھر کی چھت سے شہد ٹپکنے لگا اور آپ سوچ رہے ہوں گے کہ کتنی خوش قسمت ہے، لیکن اصل حقیقت جان کر آپ بھی کہیں گے کہ خدا نہ کرے کبھی آپ کو ایسی خوش قسمتی کا سامنا کرنا پڑے۔
چیرش ملزاک نامی خاتون کا کہنا ہے کہ گزشتہ کچھ عرصے سے وہ اپنے گھر میں شہد کی مکھیوں کو بھنبھناتے ہوئے دیکھ رہی تھیں لیکن ان کا خیال تھا کہ شاید یہ ادھر اْدھر کسی باغیچے سے آجاتی ہیں۔ کچھ دنوں سے مکھیوں کی تعداد میں کافی اضافہ ہوگیا تھا۔ پھر ایک دن وہ دفتر سے واپس آئیں تو چھت سے ٹپکنے والے سیال مادے کو دیکھ کر حیرت زدہ رہ گئیں۔ چیرش کا کہنا ہے کہ جب انہوں نے غور سے دیکھا تو پتہ چلا کہ یہ شہد تھا، مگر وہ حیران تھیں کہ چھت سے شہد کیوں ٹپک رہا تھا۔ اب پہلی بار انہیں مکھیوں کی موجودگی کی کچھ سمجھ آئی اور شک ہوا کہ شاید چھت میں انہوں نے اپنا چھتہ بنارکھا ہے۔
چیرش نے صورتحال کو خطرناک جانتے ہوئے فوری طور پر بروکلین سے تعلق رکھنے والے ماہر مگس بان مکی آرتر کو اطلاع کی۔ مکی یہ خبرملتے ہی فوری طور پر مکھیوں کو قابو کرنے والے ساز و سامان کے ساتھ آن پہنچے۔ انہوں نے مکھیوں سے بچاؤکیلئے خصوصی سوٹ پہنا اور پھر چھت میں چار فٹ کا سوراخ کیا۔ وہ کئی سالوں سے شہد کی مکھیوں کے چھتے اتارنے کا کام کررہے ہیں لیکن ان کا کہنا تھا کہ اس گھر کی چھت کے اندر جتنا بڑا چھتہ تھا وہ انہوں نے زندگی میں کبھی نہیں دیکھا تھا۔ ان کے اندازے کے مطابق اس گھر کی چھت میں 35ہزار سے زائد مکھیاں تھیں
مکی نے ویکیوم مشین کے ذریعے ان مکھیوں کو کھینچ کر ڈبے میں بند کرنا شروع کردیا۔ ہزاروں مکھیوں کو چھتے سے اتار کر ڈبے میں بند کرنے میں انہیں چھ گھنٹے کا وقت لگا۔ چھتہ اتنا بڑا تھا کہ اس میں سے 70 پاؤنڈ (تقریباً 32 کلو گرام) شہد برآمد ہوا۔ مکی کا کہنا تھا کہ غالباً یہ چھتہ تقریباً دو سال پرانا تھا۔ وہ تمام مکھیوں کو اتار کر بروکلین میں اپنے گھر لے گئے جہاں انہوں نے اپنے پچھلے صحن میں مکھیاں پالنے کا کاروبار شروع کررکھا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں