’’70 کی دہائی میں لوگوں کو فلمیں دیکھنے کا بڑا شوق ہوتا تھا، ایک فلم ریلیز ہوئی تو اس کی بہت مارکیٹنگ کی گئی، ایک دن کسی نے پروڈیوسر سے پوچھا کہ فلم کیسی چلی تو کہنے لگے ۔ ۔ ۔‘‘,نوازشریف نے ایسا لطیفہ سنادیا کہ صحافیوں کو بھی ہنسا دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک )مسلم لیگ ن کے صدر میا ں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ فلیگ شپ انوسٹمنٹ میں کتنی جان ہے ،میڈ یا والے جانتے ہیں ،الیکشن سے چار مہینے قبل تحریک کا مقصد کیا ہے ؟،پانچ سو ووٹ لینے والے کو وزیر اعلیٰ بنانے کا جائزہ لیں گے ۔احتساب عدالت کے باہر میڈ یا سے گفتگو کے دوران صحافی نے کیس سے متعلق سوال کیا تو نواز شریف نے مسکراتے ہوئے لطیفہ سنا یا اور کہا 1960,70کی دہائی میں لوگوں کو فلمیں دیکھنے کا بہت شوق ہوتا تھا ،اس وقت ایک فلم کی بہت پبلسٹی ہوئی جب وہ فلم لگی تو پہلے ہفتے خوب چلی ،کچھ دنوں بعد فلم کے ڈائریکٹر سے کسی نے پوچھا کہ فلم کیسی چل رہی ہے تو ڈائریکٹر نے کہا کہ پہلا ہفتہ تو زبردستی چلی ،دوسرا ہفتہ زبردستی چلانی پڑی۔
انہوں نے کہا کہ مجھے سمجھ نہیں آتی کہ حکومت کی مدت ختم ہونے میں چار مہینے رہ گئے ہیں ،ایسے وقت میں تحریک چلانے کا مقصد کیا ہے ،مولانا صاحب اس وقت کینیڈا سے تحریک چلانے کیوں آئے ہیں ؟،وہ تھوڑا انتظار کرلیں ،عوام خود فیصلہ کرلیں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کا معاملہ سنجیدہ ہے ،جس شخص کو وزیر اعلیٰ بنا یا گیا ہے اس ضمانت ضبط ہونے جا رہی تھی ۔بلوچستان کے حوالے سے دو دن بعد ایک اجلاس بلا یا ہے جس میں صوبائی لیڈر شپ بھی موجود ہو گی ،پھراس معاملے کا جائزہ لیا جائے گا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں