اگر جے آئی ٹی کی رپورٹ کی دسویں جلد سامنے آگئی تو مسلم لیگ ن کو شرمندگی ہو گی

اسلام آباد (سٹی نیوز )سپریم کورٹ میں جے آئی ٹی کی جانب سے جمع کرائی گئی رپورٹ کی دسویں جلد کو خفیہ اس لیے رکھا گیا کیونکہ اس کا تعلق غیر ملکی حکومتوں کے سات خط وکتابت سے ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری اطلاعات کے مطابق جے آئی ٹی چاہتی ہے کہ ان کی خط و کتابت کو سپریم کورٹ دیکھ لے لیکن اس کو پبلک نہ کیا جائے کیونکہ جے آئی ٹی نے جن حکومتوں کے ساتھ خط وکتابت کی یہ ان کی درخواست تھی کہ اس کو پبلک نہ کریں۔ حامد میر نے کہا کہ جس طرح ن لیگ مطالبہ کر رہی ہے کہ دسویں جلد کو سامنے لا یا جائے ،ا ورلیگی رہنما کہہ رہے ہیں کہ ان میں کچھ ایسے دستا ویزات ہیں جو تصدیق شدہ نہیں ہیں۔حامد میر نے کہا کہ لگتا ہے کہ لیگی رہنما سنی سنائی بات کر رہے ہیں کیونکہ رپورٹ کی دسویں جلد کو سپریم کورٹ کے تین ججز اور جے آئی ٹی کے چھ ارکان کے علاوہ کسی نے نہیں دیکھا۔حامد میر نے کہا کہ اگر لیگی رہنما دسویں جلد کو سامنے لانے کا مطالبہ کر رہے ہیں تو سپریم کورٹ اس جلد کو منظر عام پر لے ہی آئے تو اچھا ہو گا تاکہ ثابت ہو جائے کہ لیگی رہنما بے بنیا د الزامات لگا رہے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ اگر جے آئی ٹی کی رپورٹ کی دسویں جلد سامنے آگئی تو مسلم لیگ ن کو شرمندگی ہو گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں