”قرآن پاک پڑھیں، صبر کریں، اللہ آپ کو استقامت دے“ زرداری نے نواز شریف کے کاندھے، مریم کے سر پر ہاتھ رکھ کر افسوس کا اظہار کیا

لاہور (ویب ڈیسک) سابق صدر آصف علی زرداری اپنی جماعت کے اعلیٰ سطحی وفد، بلاول بھٹو زرداری، شیری رحمن، راجہ پرویز اشرف، رحمن ملک، فرحت اللہ بابر، قمر زمان کائرہ، مصطفی نواز کھوکھر اور عزیز الرحمن چن کے ساتھ جب جاتی امرا پہنچے تو مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے ان کا خیر مقدم کیا۔ اس موقع پر خواجہ محمد آصف، ایاز صادق، پرویز رشید، حمزہ شہباز بھی موجود تھے۔
سابق وزیر اعظم نواز شریف اپنی رہائش گاہ کے مین گیٹ پر سابق صدر آصف زرداری کو خود ملے جس پر آصف زرداری نے ان کے کاندھے پر ہاتھ رکھا اور اظہار افسوس کرتے ہوئے ڈرائنگ روم میں پہنچے۔ بعدازاں یہاں مریم نواز بھی آگئیں جس پر آصف زرداری نے مریم نواز کے سر پر ہاتھ رکھا۔ ان کی والدہ کا افسوس کیا اور کہا کہ قرآن پاک پڑھیں اور صبر کریں، اللہ تعالیٰ آپ کو اتقامت دے۔ یہ وقت گزرجائے گا۔ یہاں مریم نواز نے بلاول بھٹو سے بات چیت کی اور بلاول بھٹو نے ان کی والدہ کے انتقال پر اظہار افسوس کے جملے کہے جس پر مریم نواز نے ان کا شکریہ ادا کیا۔
اس موقع پر آصف زرداری نے میاں نواز شریف سے جیل کے احوال پوچھے جس پر نواز شریف نے بتایا کہ مجھے نہیں معلوم کہ یہ بی کلاس ہے یا سی کلاس مگر میں جیل کی صعوبتیں اور قید و بند کی مشکلات کو اپنی جدوجہد کا حصہ سمجھتا ہوں۔ جیل میں میری حالت خراب ہوئی، میں جانا نہیں چاہتا تھا مگر ہسپتال لے جایا گیا۔ میں سمجھتا ہوں کہ جیل جیل ہی ہوتی ہے۔ وفد کی واپسی پر مسلم لیگ ن کے ذمہ داران اور پیپلزپارٹی کے رہنماءآپس میں زیادہ گرمجوشی سے ملتے دکھائی دئیے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں