’تیسری شادی یکم جنوری کو ہی ہوئی تھی لیکن اعلان نہیں کیا جا سکتا تھا کیونکہ ۔ ۔ ۔‘‘ عمر چیمہ نے عمران خان کی شادی خفیہ رکھنے کی تہلکہ خیز وجہ بتادی

کراچی (ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی اپنی پیرنی بشریٰ سے تیسری شادی کی تصدیق ہوگئی اور صحافی عمر چیمہ نے جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے خبر پر قائم ہیں کہ نکاح یکم جنوری 2018ءکو ہی ہوا تھاجن لوگوں کا ذکر میں نے اپنی خبر میں کیا تھا وہ پی ٹی آئی کی جانب سے جاری کی جانے والی تصاویر میں بھی موجود ہیں۔

خبریں آرہی تھیں کہ طلاق کے بعد عدت ختم ہونے سے پہلے یکم جنوری آرہی تھی ،اس لیے تیکنیکی مسائل کے باعث چیزوں کو چھپایا جارہا تھا۔ ان کا کہناتھا کہ نکاح کا ڈراپ سین کرنا تھا مقتدر حلقے بھی مصر تھے جو کیا، قبول کریں آپ کیلئے سیاسی مسئلہ بھی پیدا ہوسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری خبر غلط تھی تو کم از کم اپنا نکاح خواں ہی بدل لیتے یہ تو وہی مفتی سعید صاحب جن کا میں نے ذکرکیا تھا۔ تصویر میں بھی وہی عون چوہدری ہیں جن کا ہم پہلے ذکر کر چکے ہیں کہ وہ ان کے ساتھ موجود تھے۔ میں پورے وثوق کے ساتھ کہتا ہوں کہ یکم جنوری کو ہی نکاح ہوا ہے۔

بشریٰ مانیکا نے عمران خان سے شادی کے وقت ایسا کام کردیا جو جمائمہ اور ریحام بھی نہ کر پائی تھیں
عمر چیمہ نے کہا کہ آ پ کو یاد ہوگا ریحام خان کے کیس میں بھی انہوں نے اسی طرح کیا تھا اور اس پر تو آ ن ریکارڈ ہے، ریحام خان سے 29اکتوبر کو نکاح ہوا تھا 31دسمبر کو خان صاحب نے ایک ٹوئٹ کیا تھا کہ میری شادی کے بارے میں خبریں بڑھا چڑھا کے پیش کی جا رہی ہیں اور 8جنوری کو انہوں نے عوام کو دکھانے کیلئے نکاح کیا تھا لیکن اصل میں نکاح 31اکتوبر کو ہو چکا تھا اور یہ بھی اسی طرح کی فلم ہے جو دہرائی جارہا ہے جس طرح انہوں نے 2015میں کیا تھا۔ نکاح خواہ یہی تھے میں یہ کہتا ہوں اگر یہ اتنے سچے ہیں، صادق اور امین ہیں اور ان کے پاس تو ابھی نیا نیا سرٹیفکیٹ بھی ہے تو یہ کم از کم ہمیں جھوٹا ثابت کرنے کے لیے اپنا نکاح خواں ہی بدل لیتے۔

یہ اس چیز کو زیادہ دیر تک یہ pendingنہیں کر سکتے تھے اب اس نکاح کا کوئی نہ کوئی انہیں ڈراپ سین کرنا تھا ان کو بہت سارے جو مقتدر حلقے ہیں وہ بھی اس سلسلے میں مصر تھے کہ آپ جو ہے چیز کو اسے قبول کریں ، آ پ کیلئے کوئی سیاسی مسئلہ بھی پیدا ہو سکتا ہے لیکن سب کو اندازہ ہے کہ خان صاحب جو چیز وہ پلان کر لیتے ہیں وہ اس پر قائم رہتے ہیں اور انہوں نے وہ کر دکھایا اور پھر اس سے بھاگنا ممکن بھی نہیں تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں