پاناما کیس کی سماعت کے دوران پاناما عملدر آمد بینچ کے معزز رکن جسٹس اعجاز الاحسن نے اپنے ریمارکس میں وزیر اعظم کے وکیل کو جے آئی ٹی رپورٹ کے والیوم 4 اور والیوم 10 سے محتاط رہنے کی ہدایت کی

اسلام آباد (سٹی نیوز) پاناما کیس کی سماعت کے دوران پاناما عملدر آمد بینچ کے معزز رکن جسٹس اعجاز الاحسن نے اپنے ریمارکس میں وزیر اعظم کے وکیل کو جے آئی ٹی رپورٹ کے والیوم 4 اور والیوم 10 سے محتاط رہنے کی ہدایت کی ہے۔
پاناما کیس کی سماعت کے دوران وزیر اعظم کے وکیل نے اپنے دلائل کے دوران کہا کہ اب وہ والیوم فور پر کچھ بات کرنا چاہتے ہیں۔ جس پر جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیے کہ رپورٹ کے والیوم 10 میں خطرناک دستاویزات موجود ہیں۔ والیوم 4 سے ذرا محتاط رہیں اس میں بھی خطرناک دستاویزات ہیں، والیوم فور میں ٹرسٹ ڈیڈ پر بات ہوئی اور کچھ نتائج اخذ کیے گئے ہیں۔
جج صاحب نے کہا کہ جے آئی ٹی نے ٹرسٹ ڈیڈ پر نتائج اخذ کیے ہیں ، اگر جے آئی ٹی نے کوئی دستاویز نہیں دی تو ذرائع کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں