نقیب محسود قتل کیس، تحقیقاتی ٹیم جائے مقابلہ کے مقام پر پہنچی تو وہاں کیا چیز پڑی ملی؟ تحقیقات کرنیوالوں کے بھی ہوش اڑ گئے

کراچی (ویب ڈیسک) نقیب اللہ محسود کے قتل کے بعد خیبرپختونخوا ، فاٹا اور کراچی میں احتجاجی مظاہرے پھوٹ پڑے اور چیف جسٹس کے ازخودنوٹس کے بعد تحقیقاتی ٹیم بنادی گئی جو صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے جائے مقابلہ پر پہنچی تو ایسا انکشاف ہوا کہ تحقیقات کرنیوالے بھی حیران رہ گئے ۔
نقیب اللہ پولیس مقابلے کی تحقیقات کرنیوالی کمیٹی کی توجہ کا مرکز جائے وقوعہ تھا، جب انہوں نے باریک بینی سے جائزہ لیا تو اس نتیجے پر پہنچے کہ مکان کے اندر سے کوئی فائرنگ نہیں ہوئی ،مقابلے کے چار روز بعد جائے وقوعہ سے چھبیس خول ملے اور یہ تمام خول مکان کے باہر کھڑکی کے پاس سے ملے جس نے مقابلے کے جعلی ہونے کو مزید تقویت دی۔

مکان کے اندر سے فائرنگ ہونے کا کسی بھی قسم کا کوئی ثبوت نہیں ملا جس کے بعد تحقیقاتی کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں لکھ دیا کہ مکان کے اندر سے کوئی فائرنگ نہیں ہوئی ۔
رپورٹ میں مزید بتایاگیاکہ ایس پی انوسٹی گیشن ملک الطاف نے بھی جائے مقابلہ کا دورہ نہیں کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں