پولیس کا ایک اور شرمناک ’کارنامہ‘ منظرعام پر، سیف سٹی کے کیمروں سے لڑکوں اور لڑکیوں کی لی گئی تصاویر لیک کر دی

لاہور (نیوز ڈیسک) مئی 2016ءمیں لانچ ہونے والا سیف سٹی پراجیکٹ شہریوں کی حفاظت کیلئے بنایا گیا تھا مگر اس کا غلط استعمال شروع ہو گیا ہے اور محکمہ پولیس کی جانب سے ہی ان کیمروں کے ذریعے کھینچی گئی لڑکوں اور لڑکیوں کی نجی تصاویر لیک کر دی گئی ہیں۔

یہ تصاویر بالخصوص لڑکیوں کو نشانہ بنانے کیلئے لیک کی گئی ہیں اور سوشل میڈیا پر وائرل ہو چکی ہیں جس پر صارفین کا کہنا ہے کہ یہ سب کچھ محکمہ پولیس نے کیا ہے جس کے باعث سوشل میڈیا پر ایک طوفان برپا ہے اور صارفین کا کہنا ہے کہ ان تصاویر کو مذکورہ گاڑیوں کے مالکان، لڑکوں اور لڑکیوں کو بلیک میل کرنے کیلئے بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں