سپریم کورٹ نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے وکیل کو وکالت چھوڑنے کا مشورہ دیدیا

اسلام آباد (سٹی نیوز) سپریم کورٹ نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے وکیل کو وکالت چھوڑنے کا مشورہ دیدیا۔
پاناما عملدرآمد کیس میں تین رکنی بینچ کے سامنے اپنے موکل اسحاق ڈار کی جانب سے 34سالہ ٹیکس ریکارڈ پیش کرنے والے وکیل طارق حسن نے عدالت کو بتایا کہ بطور وکیل 2لاکھ کماتا ہوں تو ظاہر کرتا ہوں۔
بیرسٹر طارق حسن کے دلائل پر بینچ کے رکن جسٹس عظمت سعید شیخ نے ریمارکس دیے کہ اگر آپ 2لاکھ سالانہ کماتے ہیں تو یہ شعبہ چھوڑ دیں۔
انہوں نے کہا کہ اسحاق ڈار کے خلاف کوئی مقدمہ ہے نہ شواہد ،جے آئی ٹی کے پاس رکارڈ نہیں تھا تو نتائج کیسے اخذ کرلیے ؟اسحاق ڈار چالیس سال سے پروفیشنل اکاوؤنٹنٹ ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں