چیئرمین نادرا کا کیس واپس ہائیکورٹ آگیا، سنے بغیر کسی کیخلاف حکم کیسے دیا جا سکتا ہے، شکر کریں صدر پاکستان اور ٹرمپ کیخلاف فیصلہ نہیں آ گیا،سپریم کورٹ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)سپریم کورٹ نے ڈپٹی چیئرمین نادرا سید مظفر کا کیس لاہور ہائی کورٹ کو واپس بھجواتے ہوئے قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کی ہدا یت کی ہے۔ ڈپٹی چیئرمین نادرا سید مظفر کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ہائیکورٹ نے ان کا موقف سنے بغیر فیصلہ دیا ہے ان کو شنوائی کا مو قع نہیں دیا گیا ،اس معاملے میں ازخود نوٹس کا اختیار استعمال کیا گیا ہے لیکن ان کے موکل کو شنوائی کا موقع ملنا چاہیے۔

جسٹس شیخ عظمت سعید نے کہا کہ کسی کو سنے بغیر اس کیخلاف حکم کیسے دیا جا سکتا ہے، شکر کریں کہ کہیں صدر پاکستان اور ڈونلڈ ٹرمپ کیخلاف فیصلہ نہیں آگیا۔ عدالت کو چیئرمین نادرا کے حوالے سے بتایا گیا کہ ڈپٹی چیئرمین کو سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار نے لگایا تھا جس پر جسٹس قاضی فائز عیسی ٰ نے کہا کہ معلوم نہیں وفاقی وزیرداخلہ نے ازخود نوٹس کا اختیار کہاں سے حاصل کرلیا۔ وکیل نے کہا کہ چیئرمین نادرا مفادات کی خاطر نادرا بورڈ کو غیر فعال کرنا چاہتے ہیں۔ جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ اچھا ہی ہے کہ بورڈ غیر فعال ہے کم از کم ملک میں سکون تو ہے،

عدالت نے کیس لاہور ہائیکورٹ کو واپس بھجواتے ہوئے قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کی ہدایت کردی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں