ایک برطانوی سیاح کو ترکی کے سمندر کی تہہ میں غوطہ خوری کرتے ہوئے ایک ایسی قیمتی چیز مل گئی

انقرہ(ویب ڈیسک) ایک برطانوی سیاح کو ترکی کے سمندر کی تہہ میں غوطہ خوری کرتے ہوئے ایک ایسی قیمتی چیز مل گئی کہ اس کی خوشی کا ٹھکانہ نہ رہا، لیکن پھر اسی چیز نے اسے جیل بھجوا دیا۔ 52سالہ ٹوبی رابنز نامی شخص اپنی فیملی کے ہمراہ سیاحت کے لیے ترکی گیا جہاں ایک روز وہ سمندر میں غوطہ خوری کر رہا تھا کہ اسے سمندر کی تہہ میں پڑے 13انتہائی قدیم سکے مل گئے۔ رابنز وہ قیمتی سکے نکال کر اپنے ساتھ ہوٹل لے آیا اور برطانیہ واپسی پر انہیں اپنے بیگ میں رکھ لیا۔
جب وہ میلاس بودرم ایئرپورٹ پر پہنچنے تو وہاں سکیورٹی فورسز نے بیگ میں سکوں کی موجودگی کا انکشاف ہونے پر رابنز کو گرفتار کر لیا۔ اس پر ترکی کے تاریخی نوادرات سمگل کرنے کے الزام میں مقدمہ قائم کرکے عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت کی طرف سے اسے ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا ہے۔اگر اس پر نوادرات سمگل کرنے کا الزام ثابت ہو گیا تو اسے 3سال سے زائد قید کی سزا ہو سکتی ہے۔ رابنز کی 43سالہ اہلیہ ہیڈی کا کہنا ہے کہ ’’پولیس نے گرفتاری کے اگلے روز ہی رابنز کو عدالت میں پیش کر دیا۔پولیس نے اس کا موبائل فون بھی قبضے میں لے لیا ہے جس کی وجہ سے ہماری اس سے بات نہیں ہو پا رہی۔‘‘

اپنا تبصرہ بھیجیں