ن لیگ کا سینٹ کے آزاد امیداروں سے وفاداری کا حلف لینے کا فیصلہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن ہارس ٹریڈنگ کے خدشے کے پیش نظر سینیٹ انتخابات میں آزادحیثیت سے حصہ لینے اپنے ارکان سے وفاداریاں تبدیل نہ کرنے اور جیتنے کے بعد پارٹی میں واپسی کی حلف پر یقین دہانی لے گی۔
سینیٹ الیکشن میں حصہ لینے والے کل105امیدواروں میں سے 21ن لیگ کے ارکان ہیں جواب آزادحیثیت سے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔ لیگی قیادت کو خدشہ ہے کہ حزب اختلاف کی جماعتوں کی طرف سے آزادانہ امیدواروں کی وفاداریاں خریدی جاسکتی ہیں اسی تناظرمیں نوازشریف نے ان سے حلف پروفاداری نہ بدلنے کی یقین دہانی لینے کافیصلہ کی

اس ضمن میں انھوں نے حال ہی میں پنجاب ہاؤس اسلام آباد اور جاتی امراء میں اجلاس منعقدکئے جن میں راجہ ظفرالحق کوٹاسک دیاگیاکہ وہ جلد تمام آزاد امیدواروں کو جاتی امراء میں اکٹھا کریں۔
ذرائع کے مطابق امیدواروں کون لیگ کے وفاداررہنے پر دیگرفوائد کی پیشکش بھی کی جائیگی۔ ن لیگ کے ایک سینیٹر نے نام نہ ظاہرکرنے کی شرط پر بتایا کہ حزب اختلاف کی جماعتیں خصوصاً پیپلزپارٹی پرکشش مراعات کے عوض ن لیگ کے آزاد امیدواروںکی وفادریاں تبدیل کرانے کی کوشش کررہی ہے۔
لیگی قیادت نے قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں پارلیمانی رہنماؤں کوبھی ہدایت کی ہے کہ وہ ارکان سے رابطے کرکے یہ یقینی بنائیں کہ سینیٹ انتخابات صرف پارٹی کے نامزد (آزاد) امیدواروں کوہی ووٹ دیں۔ وزیراعظم خودبھی آزادامیدواروں کو ہارس ٹریڈنگ سے بچانے میں اہم کرداراداکررہے ہیں۔
راجہ ظفرالحق نے آزاد امیدواروں کوبلاکر یقین دہانی لینے کی تردید کی اور کہاکہ لیگی امیدواروں کی نامزدگی نوازشریف نے کی تھی۔ اگرچہ پارٹی کو سینیٹ الیکشن سے روک دیاگیا لیکن یہ کوئی مسئلہ نہیں، آزاد امیدواروں کی ن لیگ کی بنیادی رکنیت ہے اور ان میں سے زیادہ ترآزمودہ ساتھی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں