ملتان: ممتاز صوفی بزرگ بہاوالدین زکریا کے عرس کے موقع پر شاہ محمود قریشی اور ان کے بھائی مرید حسین قریشی کے درمیان تلخ کلامی

ملتان(نیوز ڈیسک ) ملتان میں ممتاز صوفی بزرگ بہاوالدین زکریا کے عرس کے موقع پر شاہ محمود قریشی اور ان کے بھائی مرید حسین قریشی کے درمیان تلخ کلامی ہو گئی،تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی کے بھائی مرید حسین قریشی کا کہنا تھا کہ بھائی نے سیاست کی خاطر خاندان کا نام ڈبو دیا وہ فیصلہ کرلیں کہ انہیں ایمان چاہئے یا عمران خان۔ان کا کہنا تھا کہ شاہ محمود قریشی کو گدی سیاست کے لیے نہیں دی تھی ،وہ دربار پر عمران خان کی سیاست کرتے ہیں ۔انہوں نے کہا شاہ محمود قریشی نے درباروں کے لئے کیا کیا ہم نے جب بھی حق مانگا ہمیں ایک لاش دی گئی آپ کو 7 قتل کا حساب دینا ہوگا۔
۔تفصیل کے مطابق شاہ محمود قریشی سے پہلے ان کے بھائی مرید حسین حضرت بہاوالدین زکریا کے مزار میں پہنچ گئے اور مزار کو غسل دینے کے لئے سامان طلب کیا لیکن ایک مرید نے انہیں غسل کا سامان دینے سے انکار کردیا جس پر مرید حسین سیخ پا ہوگئے اور انہوں نے مرید پر تھپڑوں کی بارش کردی۔بہاوالدین زکریا ملتانی کے عرس کی تقریبات کے افتتاح کے بعد مرید حسین قریشی اسٹیج پر چڑھ گئے اور حاضرین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں نے شاہ محمود قریشی کو یہ گدی سیاست کے لئے نہیں دی تھی اور یہ نہیں کہا تھا کہ جماعت غوثیہ کو جہاں مرضی لے جا کر بیچ دیں۔انہوں نے شاہ محمود قریشی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ پاس زمین کہاں سے آئی یہ میں جانتا ہوں میں آپ سے والد کے انتقال سے لے کر اب تک حساب لوں گا۔ان کا کہنا تھا کہ میرا والد جب تک زندہ رہا اس دربارکی مخدومی نہیں نوکری کی۔ مرید حسین بولے کہ شاہ محمود بتائیں دین سے متعلق کیا جانتے ہیں آپ؟۔ شاہ محمود اور ان کے بھائی کے درمیان اسٹیج پر مکالمہ ہوا تو مرید حسین نے کہا کہ میں بھی سجاد حسین شاہ کا بیٹا ہوں۔ تلخ کلامی کے بعد شاہ محمود کے بھائی لاحول پڑھ کراٹھ کر چلے گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں