لاہور میں بندوبست ختم ہونے سے فارغ 59 پٹواری بے یارو مددگار محکمہ ریونیو میں ایڈجسٹ کرنے کے لئے ڈی سی سے اپیل

لاہور (ویب ڈیسک) بورڈ آف ریونیو کی جانب سے ضلع لاہور میں بندوبست کو ختم کیے جانے کے احکامات پر 2003ء میں بندوبست کے لئے بھرتی کیے گئے 59 پٹواری بے یارومددگار ہوگئے ، عیدالاضحی سے قبل تنخواہیں بند کر دی گئیں۔ محکمہ ریونیو کے افسران نے ملی بھگت کر کے 29 پٹواریوں کو محکمہ ریونیو میں ایڈجسٹ کرنے کی یقین دہانی کرواوی جبکہ 59پٹواریوں کو سرپلس پول میں ڈالنے کے احکامات جاری کردیے گئے۔

سرپلس پول میں ڈالے گئے پٹواریوں نے ڈپنی کمشنر لاہور کیپٹن ر انوار الحق کو تحریری طور پر اپیل کی ہے کہ نظرثانی کرتے ہوئے سرپلس پول میں ڈالے گئے پٹواریوں کو محکمہ ریونیو میں ایڈجسٹ کیا جائے۔ ڈپٹی کمشنر لاہور نے معاملہ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو کو بھجوادیا ہے۔ سرپلس پٹواریوں نے ڈپٹی کمشنر لاہور سے استدعا کی ہے کہ گورنر پنجاب کی جانب سے جاری نوٹیفکشن کے بعد دو ہزار میں ضلع لاہور میں بندوبست شروع کیا گیا جس پر2003ء میں ڈی پی سی کے تحت ضلع لاہور میں 116 پٹواری بھرتی کیے گئے 84 پٹواری گزشتہ پندرہ سالوں سے بندوبست کا کام کرتے رہے تاہم 23 پٹواری خاموشی کے ساتھ محکمہ ریونیو میں ایڈجسٹ کر لئے گئے ۔
ورڈ آف ریونیو کی جانب سے 20 جولائی 2018ء کو ضلع لاہور پنڈی اورگجرات میں بندوبست ختم کرنے کا حکم جاری کر دیا گیا اور بندوبست کا کام کرنے والے پٹوایوں کو سرپلس پول میں ڈال دیا گیا۔ ضلع لاہور میں کل 251 پٹوار سرکل ہیں جبکہ ضلع لاہور کو پانچ تحصیلوں میں تقسیم کیا جا چکا ہے۔ اس وقت کینٹ تحصیل کی پانچ قانونگوئی میں 63 پٹوار سر کل ، ماڈل ٹاؤن تحصیل کی پانچ قانونگوئی میں 46 پٹوار سرکل ، شالیمار تحصیل کی پانچ قانونگوئی میں 54 پٹوارسرکل ، تحصیل سٹی کی چھ قانونگوئی میں 44 پٹوارسرکل جبکہ تحصیل رائے ونڈ کی پانچ قانونگوئی میں 44 پٹوار سرکل ہیں اس کے علاوہ ضلع لاہور میں پٹواریوں کی31 آسامیاں خالی ہیں اس صورتحال کے پیش نظر سرپلس پول میں ڈالے گئے پٹواریوں کو باآسانی سے ایڈجسٹ کیاجا سکتا ہے۔ سرپلس پول میں ڈالے گئے پٹوایوں نے ڈپٹی کمشنر لاہور سے اپیل کی ہے کہ وہ ہماری داد رسی کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں