’ آنکھ پر بننے والے غدود کے آپریشن کیلئے نوجوان پاکستانی لڑکی ہسپتال آئی تو ڈاکٹر نے بے ہوش کرکے آنکھ کی بجائے جسم کے ایسے حصے کا آپریشن کردیا کہ ۔ ۔ ۔

کوئٹہ (ویب ڈیسک ) بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کے ہسپتال میں سرجن نے مبینہ طور پر مریضہ کی آنکھ کے اوپر بننے والے غدود کا آپریشن کرنے کے بجائے ہرنیا کا آپریشن کردیا ہے، مریضوں کے مطابق پہلے بھی ایسے کیسز ہوچکے ہیں۔

بولان کے علاقے مچھ کی رہائشی 20سالہ لڑکی کو آنکھ کے اوپر غدود کے آپریشن کے لیے کوئٹہ کے شیخ زید ہسپتال لایا گیا، ڈاکٹروں نے مرض کامعائنہ کرکے اسے آپریشن کے ذریعے نکالنے کا علاج تفویض کیا۔ مریضہ کا کہنا ہے کہ اس کی آنکھ اوپر بننے والا غدود وقت کے ساتھ بڑھتا جارہا تھا‘ ڈاکٹر کو دکھایا تو انہوں نے آپریشن کرکے نکالنے کا کہا۔مریضہ کے مطابق اسے آپریشن تھیٹر لے جایا گیا تو سرجن نے اس سے بات چیت بھی کی ‘انہوں نے سرجن کو بتایا کہ آپریشن کے دوران بھنوﺅں کا خیال رکھئے گا۔سرجن نے اسے تسلی دے کر بے ہوش کردیا جب ہوش میں آئی تو غدود اپنی جگہ موجود تھا جبکہ پیٹ پر ٹانکے لگے تھے۔

اسد عمر کے بیٹے کی دعوت ولیمہ، تصاویر منظرعام پر، دلہن کیسی دکھتی ہے؟ آپ بھی دیکھ کر حیران رہ جائیں گے
غلط آپریشن پر مریضہ کے اہل خانہ شدید پریشانی میں مبتلا ہوگئے اور ہسپتال انتظامیہ سے رجوع کیا‘ معاملے کی سنگینی کو دیکھ کرہسپتال انتظامیہ اہل خانہ کو مبینہ طور پر مختلف حیلے بہانوں سےمنانے کے لیے متحرک ہوگئی اور غلط آپریشن کی تحقیقات کے لیے تین رکنی کمیٹی بھی تشکیل دے دی۔ ہسپتال میں علاج کے لیے موجود مریضوں کے تیمارداروں کا کہنا ہے کہ اس طرح کے کیسز اس ہسپتال میں پہلے بھی ریکارڈ ہوئے ہیں‘ معاملے کی سنگینی کے پیشِ نظر ہسپتال انتظامیہ کا موقف جاننے کے لیے متعدد بار رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی ‘ تاہم انتظامیہ نے کسی بھی قسم کا موقف دینے سے انکار کردیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں