” نااہلی کیس کی سماعت کے دوران بابر اعوان نے چیف جسٹس سے ’بابارحمتے‘ سے ملانے کا مطالبہ کردیا‘ اس پر جسٹس ثاقب نثار نے کیا جواب دیا؟ عدالت میں موجود ہرشخص اتفاق کرنے پر مجبور ہوگیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)سپریم کورٹ میں آرٹیکل 62 ون ایف کی سماعت کے دوران بابر اعوان کے مطالبہ” بابا رحمتے سے ملاقات کرا دیں تاکہ کچھ وقت مانگ لوں “ میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بابارحمت اصل میں ماں ہیں،جوہمارے لئے دعاکرتی ہے،چیف جسٹس آف پاکستان نے کہا کہ والدہ دنیامیں بھی دعادیتی ہے اور دنیا سے جاکربھی۔
اس پر بابر اعوان نے عدالت سے استدعا کی کہ میری درخواست ہے اس کیس میں فل کورٹ بنائی جائے کیونکہ عدالتی فیصلے نے آئندہ کے الیکشن پراثر اندازہونا ہے۔
اس پر چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ اس کیس کی سماعت کیلئے ہمیں شام 7 بجے تک ہی کیوں نہ بیٹھنا پڑے ، عدالت میں بیٹھیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں