اسحاق ڈار کے خلاف اثاثہ جات ضمنی ریفرنس ، ملزمان پر فردِ جرم عائد نہیں کی جاسکی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) احتساب عدالت میں آج (جمعہ کو) بھی اسحاق ڈار پر اثاثہ جات ضمنی ریفرنس میں فردِ جرم عائد نہیں کی جاسکی ، عدالت نے ملزمان کی مچلکے واپس لینے کی درخواست مسترد کردی۔
اسلام آباد کی احتساب عدالت میں اسحاق ڈار کے خلاف اثاثہ جات ضمنی ریفرنس کی سماعت ہوئی۔ دوران سماعت ملزمان کے وکیل حشمت حبیب نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے ہائی کورٹ میں جو درخواست دائر کی تھی اس کا تحریری حکمنامہ موصول نہیں ہوسکا جس کے باعث آج (جمعہ کو) فردِ جرم عائد نہ کی جائے۔ نیب پراسیکیوٹر نے بھی عدالت کے روبرو یہی عذر پیش کیا اور کہا کہ انہوں نے بھی حکمنامے کی کاپی کیلئے درخواست دے دی ہے اور آج ہی حکمنامہ موصول ہوجائے گا۔ وکلا کی درخواست کے باعث جج محمد بشیر نے اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات ضمنی ریفرنس کی مزید سماعت 2 اپریل تک ملتوی کردی۔
دوران سماعت ملزمان کی جانب سے مچلکے کی رقم واپس لینے کی درخواست کی گئی جو کہ مسترد کردی گئی۔ جج محمد بشیر نے کہا کہ 8 مچلکے جمع نہ کرائے تو ملزمان کو جیل بھیج دوں گا۔ جج کے حکم پر صدر نیشنل بینک محمد سعید اور ہجویری ٹرسٹ کے ڈائریکٹر کی جانب سے فوری طور پر 20 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کرادیے گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں