شیخ رشید احمد نے کہا کہ میں نے شادی نہیں کی اسی لیے کرپشن سے بچا ہوا ہوں

راولپنڈی (ویب ڈیسک) عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ کرپشن میں بیویوں کا بڑا ہاتھ ہوتا ہے اور وہ شادی نہ ہونے کی وجہ سے کرپشن سے بچ گئے ہیں، نواز شریف نے انہیں کہا تھا کہ ٹیکسٹائل مل لگا لو لیکن انہوں نے انکار کردیا۔
شیخ رشید احمد نے کہا کہ میں نے شادی نہیں کی اسی لیے کرپشن سے بچا ہوا ہوں کیونکہ بیویوں کا کرپشن میں بڑا ہاتھ ہوتا ہے۔ مجھے کوئی مسئلہ نہیں ہے لیکن ٹیکسٹائل مل (شادی) لگانے کا بھی کوئی شوق نہیں ہے، 1988 سے 1989 میں نواز شریف صاحب نے کہا تھا کہ ٹیکسٹائل مل لگا لو لیکن میں نے یہ کام نہیں کیا۔
انہوں نے کہا کہ شادی کے حوالے سے میری ماں ہر وقت روتی رہتی تھی لیکن میں نے خاندانی ذمہ داریاں نبھائیں۔ خاندانی ذمہ داریاں نبھانے کیلئے کچھ نہ کچھ قربانی تو دینی ہی پڑتی ہے اور میں نے شادی والی قربانی خوش اسلوبی سے دے دی۔
انہوں نے کہا کہ لال حویلی کے نیچے کتابیں بیچا کرتا تھا، لوگ کہتے ہیں کہ شیخ رشید فلاں نلکے سے پانی بھرا کرتا تھا اور نیکر پہنا کرتا تھا۔دل میں شادی نہ کرنے کے حوالے سے کوئی خلش نہیں ہے کیونکہ اللہ نے بہت عزت دی اور بھابھڑہ بازار سے اٹھا کر 7 بار وزیر بنایا۔
شیخ رشید نے انٹرویو کے دوران ایک دلچسپ واقعہ بھی سنایا اور کہا کہ بچپن میں اپنی ماں سے لڑا کرتا تھا کہ میری کونسلر بننے کی کب عمر ہوگی، ایک دفعہ والد صاحب سے کہا کہ اگر میں تقسیم ہند کے وقت جوان ہوتا تو مسلمانوں کو بحفاظت پاکستان لے آتا اور کسی کو بھی مرنے نہ دیتا۔ میری یہ بات سن کر والد صاحب نے کہا کہ اگر تم اس وقت ہوتے تو یقینی طور پر تم قائد اعظم کی بجائے مولانا ابوالکلام آزادکے ساتھ کانگریس میں ہوتے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں